ایران اور ترکی مابین دیوار فاصل کا پہلا مرحلہ مکمل

دیوار کی تعمیر کا مقصد افغان مہاجرین کی آمد اور سمگلنگ کی روک تھام ہے،ترک وزیر داخلہ

جمعرات اپریل 23:20

تہران/انقرہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 اپریل2018ء) ایران اور ترکی مابین دیوار فاصل کا پہلا مرحلہ مکمل کر لیا گیا،دیوار کی تعمیر کا مقصد افغان مہاجرین کی آمد اور سمگلنگ کی روک تھام ہے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق ترکی اور ایران کے سرحد پر دیوار فاصل کی تعمیر کا کام تیزی کے ساتھ جاری ہے۔ ترک حکام کا کہنا ہے کہ ایران سے متصل سرحد پر دیوار کی تعمیر کا پہلا فیز مکمل کرلیا گیا ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ پہلے مرحلے میں تقریبا 144 کلومیٹر کے علاقے پر دیوار کی تعمیر پایہ تکمیل کو پہنچنے والی جب کہ مجموعی طور پر دونوں ملکوں کے درمیان 500 کلومیٹر طویل دیوار تعمیر کی جائے گی۔ وزیر داخلہ سلیمان سیلو نے اپنے بیان میںکہا ہے کہ ایران کی سرحد پرغیر قانونی تارکین وطن بالخصوص افغان شہریوں کی ایران کے راستے ترکی داخلی کی راہ روکنے کے لیے دیوار کا پہلا مرحلہ مکمل کر لیا گیا ہے۔

(جاری ہے)

خیال رہے کہ یہ دیوار ترکی کے سرحدی شہروں آگری اور آئی گدیر سے متصل سرحد پر تعمیر کی جا رہی ہے۔ یہ دونوں شہر افغان مہاجرین کی آمد کی وجہ سے مشہور ہیں۔ اس کے علاوہ ترکی سے ایران اسمگلنگ کے لیے بھی ان شہروں کی سرحد کو استعمال کیاجاتا ہے۔ ترک وزیر کا کہنا ہے کہ اس دیوار کی تعمیر کا اصل مقصد افغانی تارکین وطن کو ترکی میں داخل ہونے سے روکنا ہے۔

متعلقہ عنوان :