بھارت، پنجاب نیشنل بنک نے قرض داروں سے وصولی کے لئے جاسوسوں کی خدمات حاصل کر لیں

جمعرات اپریل 23:31

نئی دہلی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 اپریل2018ء) بھارتی پنجاب نیشنل بینک (پی این بی) نے مفرور اور لاپتہ قرض داروں سے وصولی کے لئے جاسوسوں کی خدمات حاصل کر لیں۔ بھارتی میڈیا کے مطابقبھارتیپنجاب نیشنل بینک (پی این بی) نیمفرور اور لاپتہ قرض داروں کا سراغ لگانے کیلئے خفیہ ایجنسیوں سے معاہدے کے لئے درخواستیں طلب کی ہیں۔ معاہدہ کرنے والی ایجنسیوں کا کام ان قرض داروں، معاون قرض داروں، ضمانت دینے والوں اور ان کے قانونی وارثوں کا سراغ لگانا ہے جوبینک کو فراہم کردہ پتہ پر موجود نہیں۔

ملک کے دوسرے سب سے بڑے بینک پی این بی کا غیروصولی قرضہ 2017 کے مطابق 57519 کروڑ روپے تک پہنچ چکا ہے جو کل قرض کا 12.11 فیصد ہے۔ذرائع کے مطابق پی این بی نادہندگان کے ناموں کی تشہیر ذرائع ابلاغ میں کریگا۔

(جاری ہے)

بینک نے ہر مہینے 150 کروڑ روپے تک (Non-performing asset)غیر استعمال شدہ اثاثو کی وصولی کا ہدف رکھا ہے۔واضح ہو کہ نیرو مودی اور میہل چوکسی کی مالیاتی گھپلے بازی سیپنجاب نیشنل بینک کی 13 ہزار کروڑ سے زائد رقم پھنس کر رہ گئی ہے۔

بینک نے کہا کہ جاسوسی کرنے والی ایجنسیوں کا پینل تشکیل دینے کیلئیدر خواستیں طلب کی جارہی ہیں تاکہ پھنسے ہوئے قرضوں کی وصولیابی کا عمل ا?سان ہوسکے۔ یہ ایجنسیاں قرض وصولی کے لئے فیلڈ میں کام کرنیوالیملازمین کی رہنمائی کرینگی۔خواہشمندامیدواروں اور خفیہ ایجنسیوں سے 25 اپریل سے 5 مئی تک درخواستیں اور ضروری دستاویزات پیش کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔