پانچ سال کے دوران ترقیاتی اخراجات میں اضافہ، افراط زر کی شرح میں کمی، مالیاتی پالیسی کو محتاط بنانے سمیت سی پیک منصوبے کے حوالے سے کی جانے والی سرمایہ کاری میں نمایاں اضافہ ہوا،اقتصادی جائزہ رپورٹ

جمعرات اپریل 23:41

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 اپریل2018ء) اقتصادی جائزہ رپورٹ برائے مالی سال 2017-18 کے مطابق گزشتہ پانچ سال کے دوران پاکستان کی معاشی ترقی میں نمایاں اضافہ ہوا ہے اور حکومت کی دانشمندانہ اقتصادی پالیسیوں کے نتیجہ میں ترقیاتی اخراجات میں اضافہ، افراط زر کی شرح میں کمی، مالیاتی پالیسی کو محتاط بنانے سمیت چین پاکستان اقتصادی راہداری ((سی پیک)) منصوبے کے حوالے سے کی جانے والی سرمایہ کاری میں نمایاں اضافہ ہوا ہے۔

رپورٹ کے مطابق گزشتہ دو سال کے دوران قومی معیشت کی شرح ترقی 5 فیصد سے زائد رہی ہے جبکہ زراعت، صنعت اور خدمات کے شعبوں کی کارکردگی کی بنیاد پر یہ شرح نمو گزشتہ 13 سال کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ۔ اسی طرح بڑے صنعتی اداروں کے شعبہ میں بھی 6.13 فیصد کی شرح ترقی حاصل کی ہے جو گزشتہ 10 سال کے دوران سب سے زائد ہے جبکہ صنعتی شعبے کی شرح نمو 5.8 فیصد تک بڑھ گئی۔

(جاری ہے)

اقتصادی جائزہ رپورٹ کے مطابق جنگلات کے شعبے کی شرح نمو 7.17 فیصد رہی ہے۔ حکومت کی پالیسیوں کے نتیجہ میں قومی بچت اور گھریلو بچتوں کی جی ڈی پی کے فی صد کے حوالے سے شرح میں نمایاں اضافہ ہوا ہے۔ مالی سال 2018ء کے دوران مالی سال 2017ء کے مقابلے میں قومی آمدنی اخراجات کی نسبت سے کم رہی جس کی وجہ سے بچتوں اور سرمایہ کاری کے درمیان فرق میں اضافہ ہوا۔

متعلقہ عنوان :