بھارت میں 200 کلومیٹر پر پھیلے بادل اور آسمانی بجلی گرنے کے 36 ہزار واقعات

آسمانی بجلی گرنے سے 9 افرادہلاک،واقعات کو غیر معمولی قرار دیا جا رہا ہے،سربراہ ایمرجنسی سینٹر

جمعہ اپریل 12:23

نئی دہلی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 اپریل2018ء) بھارت کی جنوبی ریاست آندھرا پردیش کے حکام نے کہاہے کہ محض 13 گھنٹوں کے دوران 36 ہزار 749 بار آسمانی بجلی گرنے کے واقعات ریکارڈ کیے گئے ۔۔بھارتی ٹی وی کے مطابق ریاستی حکام نے کہاکہ آسمانی بجلی گرنے کے واقعات غیر معمولی ہیں اور اس کی وجہ شدید موسمی پیٹرن ہے۔حکام کا کہنا تھا کہ آسمانی بجلی گرنے کے واقعات میں ایک نو سالہ بچی سمیت نو افراد ہلاک ہوئے۔

(جاری ہے)

حکام کا کہنا تھا کہ مون سون میں آسمانی بجلی گرنا عام بات ہے جو جون سے ستمبر تک ہوتا ہے۔ریاستی ایمرجنسی سینٹر کے سربراہ کشن سنکو نے بتایا کہ عام طور پر مون سون سے قبل اس علاقے میں بجلی گرنے کے واقعات ہوتے ہیں۔تاہم گزشتہ روز بجلی گرنے کے واقعات کو غیر معمولی قرار دیا جا رہا ہے کیونکہ گذشتہ سال کے اعداد و شمار کے مطابق مئی کے پورے مہینے میں بجلی گرنے کے 30 ہزار واقعات ریکارڈ کیے گئے تھے۔چند سائنسدانوں کا کہناتھا کہ عالمی حدت میں اضافے کے باعث بجلی گرنے کے واقعات میں اضافہ ہو گا۔

متعلقہ عنوان :