شب برات،آرپی او سرگودھاکی ڈی پی اوز کو شب برات پر سیکورٹی کے انتظامات سخت کرنے کی ہدایت

سیکیورٹی انتظامات کو مزید بہتر کریں، ضلع پولیس مساجد کی انتظامیہ کے ساتھ مل کر سیکورٹی پلان تشکیل دے ،ْآر پی اور محمد اختر عباس

جمعہ اپریل 15:21

سرگودھا(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 اپریل2018ء) ریجنل پولیس آفیسر سرگودھا ڈاکٹر محمد اختر عباس نے ریجن کے ڈی پی اوز کو شب برات کے موقع پر اپنے اپنے اضلاع میں سیکورٹی کے انتظامات سخت کرنے اور ورکرز سے جبری مشقت لینے والے بھٹہ مالکان کے خلاف قانونی کاروائی کرنے کی ہدایات جاری کر دیں۔ آر پی او سرگودھا ڈاکٹر محمد اخترعباس نے ریجن میں شب برات کے موقع پر چاروں اضلاع کے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسرز کو ہدایت کی کہ سیکیورٹی انتظامات کو مزید بہتر کریں۔

ضلع پولیس مساجد کی انتظامیہ کے ساتھ مل کر سیکورٹی پلان تشکیل دے۔لوکل انتظامیہ اور پولیس مل کر اہم جگہوں پر واک تھرو گیٹس کی بروقت تنصیب کو یقینی بنائیں۔جن جگہوں پر شب برات کے پروگرام منعقد ہونے ہیں ان جگہوں پر محکمہ سول ڈیفنس کے ساتھ مل کر سرچ اینڈ سویپ آپریشن کیا جائے۔

(جاری ہے)

کھلی جگہوں پر شب برات کے پروگرام کی ممانعت ہو گی۔اہم مساجد، امام بارگاہوں،مزار اور درباروں کی چھتوں پر سنائیپر تعینات کیے جائیں۔

مذہبی رہنماوں اورسکالرز کی سیکیورٹی بڑھائی جائے۔تمام اضلاع کی امن کمیٹیوں کو فعال کیا جائے۔فورتھ شیڈول میں شامل افراد کی کڑی نگرانی کی جائے۔ہوٹل، سرائے،پارکس،بازار،،ریلوے اسٹیشن اوربس سٹینڈ کی سیکیورٹی سخت کی جائے۔تمام مساجد، امام بارگاہوںاور اقلیتی عبادت گاہوں کی سیکیورٹی سخت کی جائے۔نفرت انگیز تقریر اور لاوڈ سپیکر کے غیر قانونی استعمال کے خلاف بلا تفریق کاروائی کی جائے۔

کسی بھی شخص کو جامہ تلاشی کے بغیر اندرجانے کی اجازت نہ دی جائے۔آر پی او سرگودھا نے کہا کہ آتشبازی کا سامان تیار اور فروخت کرنے والے دکانداروں کے خلاف سخت قانونی کاروائی کی جائے اور تمام ڈی پی اوز اپنے اپنے اضلاع میں آتشبازی کے سامان کی فروخت پر پابندی کو یقینی بنائیں تاکہ کسی بھی قسم کے نقصان اور حادثے سے بچا جا سکے۔سیکیورٹی پر مامور اہلکاروں کو ڈیوٹی پر جانے سے پہلے موجودہ ملکی حالات کے تناظر میں بریفنگ دی جائے تاکہ اپنی ڈیوٹی احسن طریقہ سے سر انجام دے سکیں۔

آر پی او سرگودھا نے چاروں اضلاع کے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسرز کو ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ اینٹوں کے بھٹوں پر ورکرز سے جبری مشقت کے مستقل خاتمے کے لیے باقاعدہ مہم کی صورت میں کاروائیاں شروع کی جائیں۔ کریک ڈاون کو موثر بنانے کے لیے مقامی پولیس سپیشل برانچ،،بلدیاتی نمائندوں اور سول سو سائٹی کے اراکین سے تعاون حاصل کرے۔چائلڈ پروٹیکشن بیورو اور لیبر ڈیپارٹمنٹ کے ساتھ مل کر جبری مشقت لینے والے بھٹہ مالکان یا مینجرز کے خلاف سخت قانونی کاروائی کی جائے۔