بے بسی مجھےنہیں آپ کومنظورہوسکتی ہے

سزاہوئی توجیل کی دیواروں کےپیچھےاپنا کردارادا کروںگا، میراضمیرنہیں مانتا کہ گھربیٹھ جاؤں اورشکست تسلیم کرلوں،،ووٹ کی عزت سےتمام ادارےاپنی جگہ پرآجائیںگے،تاحیات ناہلی کافیصلہ صرف پارلیمنٹ کااختیارہے۔نواز شریف کا پارٹی کارکنان سے خطاب

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ جمعہ اپریل 15:47

بے بسی مجھےنہیں آپ کومنظورہوسکتی ہے
اسلام آباد(اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔27 اپریل 2018ء) : پاکستان مسلم لیگ ن کے قائد محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ میرا ضمیر نہیں مانتا کہ گھر بیٹھ جاؤں اور شکست تسلیم کرلوں،بے بسی مجھے نہیں آپ کومنظور ہوسکتی ہے،،ووٹ کی عزت سے تمام ادارے اپنی جگہ پرآجائیں گے،تاحیات ناہلی کا فیصلہ صرف پارلیمنٹ کا اختیار ہے،ساڑھے 18لاکھ مقدمات عدالتوں میں زیرالتواء ہیں۔

انہوں نے آج یہاں سرگودھا ڈویژن کے کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ہمیں حکومت نہیں کرنے دی گئی ہماری حکومت کیخلاف صرف سازشیں کی گئیں۔اس کے باوجود ہماری حکومت نے ملک میں بجلی کی لوڈشیڈنگ اور دہشتگردی کے ختم کیا۔ انہوں نے کہا کہ جنہوں نے 60 ملین ڈالر کمیشن کھایا،این آئی سی ایل میں اربوں کھائے وہ کہاں ہیں؟ انہوں نے کہاکہ ڈرنے کی کوئی بات نہیں ہے ۔

(جاری ہے)

جوڈر گیا وہ مرگیا۔ بے بسی آپ کومنظور ہوسکتی ہے لیکن مجھے منظور نہیں ہے۔۔میرا ضمیر نہیں مانتا کہ گھر بیٹھ جاؤں اور شکست تسلیم کرلوں۔آپ حق پرہیں توکوئی بھی آپ کاکچھ نہیں بگاڑ سکتا۔ ووٹ کی عزت سے تمام ادارے اپنی جگہ پرآجائیں گے۔انہوں نے کہا کہ اگر خدانخواستہ سزا دی گئی تو جیل کی دیواروں کے پیچھے سے بھی کردار ادا کروں گا۔ انہوں نے کہاکہ میرے خلاف کرپشن کا کوئی کیس نہیں بن سکا۔

تاحیات ناہلی کا فیصلہ صرف پارلیمنٹ کا اختیار ہے۔۔مسلم لیگ ن کوہی نشانہ بنایا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مشرف کمردردکا بہانہ بنا کرباہربھاگ گیا،اگلے دن پارٹی میں ڈانس کر رہا تھا۔ ڈکٹیٹر کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا تاریخی کام بھی ہم نے کیا۔ مشرف کو کسی میں ہلانے کی جرات نہیں ہے۔ نوازشریف نے کہا کہ ساڑھے 18لاکھ مقدمات عدالتوں میں زیرالتواء ہیں۔

انصاف کی تلاش میں لوگوں کے بال سفید ہوجاتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ کئی دفعہ بہت تکلیف ہوتی ہے سندھ میں لوگ کیسے زندگی گزارتے ہیں۔ سندھ کےعوام صوبائی حکومت سے تنگ آئے ہوئے ہیں۔ سندھی عوام بہت بے بس ہیں ۔ان کودلاسہ دیتا ہوں ۔۔سندھ میں نہ کوئی اسکول ،کالج اور نہ ہی کوئی خاص ہسپتا ل ہے۔ سندھ،، بلوچستان اور خیبر پختونخوا میں بھی جائیں گے۔