چینی سرمایہ کاروں کی کم لاگت گھروں کی تعمیر کے منصوبے میں سرمایہ کاری کا خیر مقدم کریںگے، رانا محمد ارشد

جمعہ اپریل 17:17

لاہور۔27 اپریل(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 اپریل2018ء) وزیر اعلیٰ پنجاب کے معاون خصوصی رانا محمد ارشد نے کہا ہے کہ پنجاب میںہاؤسنگ سیکٹر میں سرمایہ کاری کے بے پناہ مواقع موجود ہیں اور کم لاگت گھروں کی تعمیر کے منصوبے میں چینی گروپ کی سرمایہ کاری کا خیر مقدم کریںگے، چین کے سرمایہ کاروں کے تعاون سیپنجاب میں کم آمدن والے افراد کیلئے گھروں کی تعمیر عمل میں لائی جائے گی ، انہوںنے کہا کہ ہائوسنگ سیکٹر میں تعاون سے ہزاروں روزگار کے مواقع پیدا ہوںگے لہٰذااس منصوبے کو انفرادیت اورپیشہ ورانہ طریقے سے آگے بڑھانا ہے ۔

انہوںنے کہا کہچینی گروپ لاہور،، فیصل آباداورسیالکوٹ میں کم لاگت گھروں کی تعمیر کے منصوبے شروع کرنے کا جائزہ لے گا۔ چین میں اب تیزرفتاری سے منصوبوں کی تکمیل کے حوالے سے پنجاب کی تیز رفتار ترقی کی اصطلاح استعمال ہوتی ہے، بلاشبہ منصوبوں کی تیزرفتاری سے تکمیل کے حوالے سے تیز رفتار ترقی محمد شہباز شریف کا اعزاز ہے اور چین کی قیادت اور اعلی حکام بھی ان کی غیر معمولی صلاحیتوں کو سراہتے ہیں۔

(جاری ہے)

چین میںپنجاب کی تیز رفتار ترقی کی اصطلاح کا رائج ہونا چینی قیادت کا وزیر اعلیٰ پنجاب پر بھر پور اعتماد کا اظہار ہے۔ پنجاب کی تیز رفتار ترقی د راصل شفافیت ،کارکردگی،معیاراور کوآرڈینیشن کا دوسرا نام ہے ۔انہو ں نے کہا کہ میٹروبس سروس کے کامیاب منصوبے اوراورنج لائن میٹروٹرین کا منصو بہ و زیر اعلیٰ پنجاب کی صوبے کے عوام کوعالمی معیار کی سفری سہولتیں فراہم کرنے کی جانب اہم اقدام ہے اور یہ منصوبے آپ کی غیر معمولی صلاحیتوں کے منہ بولتے ثبوت ہیں۔

چینی سرمایہ کاروں کی صوبہ پنجاب میں کم آمدن والے گھروں کی تعمیرکے منصوبے میں ہر ممکن تعاون کریں گے اور اربن ڈویلپمنٹ کے حوالے سے بھی پنجاب حکومت کے ساتھ شراکت کار بڑھائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور چین کی دوستی کو سی پیک نے نئی جہت عطا کی ہے اور یہ تاریخ ساز منصوبہ تاریخ کا دھارا بدل دے گا۔ انہو ںنے کہا کہ چین کے صدرپاکستان کی تعمیر وترقی میں تعاون لائق تحسین ہے اورپاکستان کو معاشی طورپر مضبوط بنانے میں سی پیک اہم کردارادا کررہا ہے۔انہوںنے کہا کہ چین کے سرمایہ کار پاکستان خصوصاً پنجاب میں سرمایہ کاری کے مواقع سے فائدہ اٹھا رہے ہیں ۔۔سی پیک کے باعث سرمایہ کاری میں اضافہ ہوا ہے اور دیگر ممالک بھی سی پیک میں شمولیت میں دلچسپی لے رہے ہیں۔