حکومت مشاورت کی بجائے ہر چیز کو بلڈوز کرنا چاہتی ہے ، اسے چھٹے سال کا بجٹ پیش کرنے کا حق حاصل نہیں، شیری رحمن

جو حکومت پانچ سال کیلئے منتخب ہوئی وہ چھٹا بجٹ کیسے پیش کرسکتی ہے، اقدام آئین کی روح کے منافی ہے، نفیسہ شاہ

جمعہ اپریل 17:25

حکومت مشاورت کی بجائے ہر چیز کو بلڈوز کرنا چاہتی ہے ، اسے چھٹے سال کا ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 اپریل2018ء) سینیٹ میں قائد حزب اختلاف سینیٹر شیری رحمن نے کہا ہے کہ حکومت کو چھٹے سال کا بجٹ پیش کرنے کا حق حاصل نہیں، حکومت مشاورت کی بجائے ہر چیز کو بلڈوز کرنا چاہتی ہے۔۔پارلیمنٹ ہائوس کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سینیٹر شیری رحمن نے کہا کہ بجٹ سال کا سب سے اہم مرحلہ ہوتا ہے۔حکومت کی جانب سے کسی جماعت یا ادارے سے بجٹ سفارشات تک نہیں لی گئیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ قومی اقتصادی سروے اراکین اسمبلی کو نہیں دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو حق حاصل نہیں کہ چھٹے سال کا بجٹ پیش کرے۔ شیری رحمن نے کہا کہ حکومت مشاورت کی بجائے ہر چیز کو بلڈوز کرنا چاہتی ہے۔۔پیپلز پارٹی کی رہنماء نفیسہ شاہ نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ جو حکومت پانچ سال کیلئے منتخب ہوئی ہو وہ چھٹا بجٹ کیسے پیش کرسکتی ہے۔ نفیسہ شاہ نے کہا کہ حکومت کا چھٹا بجٹ آئین کی روح کے منافی ہے۔