یونی لیور کا آئندہ تین سال کے دوران 120 ڈالر کی سرمایہ کاری سے پنجاب میں چار فیکٹریوں میں مینو فیکچرنگ آپریشنز بڑھانے کے منصوبے کا اعلان

جمعہ اپریل 20:11

یونی لیور کا آئندہ تین سال کے دوران 120 ڈالر کی سرمایہ کاری سے پنجاب ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 اپریل2018ء) یونی لیور پاکستان نے آئندہ تین سال کے دوران 120 امریکی ڈالر کی سرمایہ کاری سے پنجاب میں اپنی چار فیکٹریوں میں مینو فیکچرنگ آپریشنز بڑھانے کے منصوبوں کا اعلان کیا ہے۔سرمایہ کاری کی حکمت عملی کی تفصیلات ایک مقامی ہوٹل میںایک کانفرنس کے دوران بتائی گئیں۔یہ سرمایہ کاری پاکستان کے میکرواکنامک استحکام اور طویل المدت افزائش کے لیے بہتر صلاحیت کا اعتراف ہے۔

یونی لیور نے بہترین عالمی طور طریقوں کے مطابق مینو فیکچرنگ کے لیے اپنی مثال آپ سہولتیں پیدا کر تے ہوئے پاکستان میں کاروبار بڑھانے کے اپنے عزم کو اجاگر کیا۔یونی لیور پاکستان لمیٹڈ کے ہیڈ آف سپلائی چین فہیم خان نے کہا کہ سرمایہ کاری کے ہمارے منصوبے ،ملک میں اچھی کنزیومر پراڈکٹس کے لیے ہماری بڑھتی ہوئی ترجیح کا جواب ہے۔

(جاری ہے)

یہ سرمایہ کاری یونی لیور کی اپنی مینوفیکچرنگ صلاحیتوں میں اضافہ کے علاوہ ہماری توسیعی ویلیو چینز کی قدر و قیمت بھی بڑھائے گی اور سپلائرز اور خدمات فراہم کرنے والوں کو ملک میں یونی لیور کی اضافی مینو فیکچرنگ سرگرمیوں سے فائدہ ہو گا۔

یونی لیور پاکستان لمیٹڈکی چیئرپرسن اور سی ای او شازیہ سید نے کہا کہ ہم تقریباً 70 سال سے پاکستان کی ترقی کا حصہ رہے ہیں ،اس عرصہ کے دوران ہم نے ہوم کیئر، پرسنل کیئر،کھانے پینے کی اشیا ،مشروبات اور آئس کریم کے شعبوں میں اپنے کاروبار کو 30 سے زیادہ برانڈز میں بڑھتے ہوئے دیکھا۔ہمیں اس حقیقت پر فخر ہے کہ ہماری95 فیصد سے زیادہ برانڈز مقامی طور پر تیار کیے جاتے ہیں،اس سے ہزاروں افراد کے لیے روزگار کے مواقع پیدا ہوتے ہیں،قومی خزانے کو فائدہ ہوتا ہے اور پاکستان کے عوام کے لیے ہر روز ایک بہتر مستقبل تخلیق ہوتا ہے۔

پاکستان میں یونی لیور کے آپریشنز کو یونی لیور کے گلوبل آپریشنز میںبہترین کارکردگی کے حامل بزنس یونٹس شمار کیا جاتا ہے۔2013 میں یونی لیور اوورسیز ہولڈنگ نے جو یونی لیور پاکستان لمیٹڈ میں اکثریتی شیئر ہولڈر ہے،400 ملین یورو(530 ملین امریکی ڈالر)) کی سرمایہ کاری کی جو پاکستان کی حالیہ تاریخ میں واحد سب سے بڑی براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری ہے۔اس سرمایہ کاری نے مقامی آپریشنز اور پاکستان کی معاشی امکانی صلاحیت کے ساتھ یونی لیور کی مضبوط وابستگی کی تجدید کی۔