حکومت ریسورس موبلائزیشن کیلئے ٹیکسوں کی شرح بڑھانے کی بجائے ٹیکس نیٹ کو بڑھائے ،عمران محمود

جمعہ اپریل 21:00

فیصل آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 اپریل2018ء) سینئر وائس چیئر مین آل پاکستان بیڈ شیٹس اینڈاپ ہولسٹری مینو فیکچررز ایسوسی ایشن اورFCCI ممبرایگزیکٹیو عمران محمود نے کہا ہے کہ پاکستان کے معاشی استحکام میں کلیدی کردار ادا کرنے کے باوجود فیصل آباد کو پالیسی ساز ی میں مسلسل نظر انداز کیا جا رہا ہے جس کی وجہ سے قومی معیشت اور بالخصوص ٹیکسٹائل کے شعبہ پر منفی اثرات مرتب ہو رہے ہیںحالانکہ فیصل آباد ملک کی مجموعی برآمدات میں 38 فیصد جبکہ ٹیکسٹائل کی برآمدات میں 55 فیصد کا حصہ ڈال رہا ہے انہوں نے حکومت پر زور دیا کہ وہ ریسورس موبلائزیشن کیلئے ٹیکسوں کی شرح بڑھانے کی بجائے ٹیکس نیٹ کو بڑھائے عمران محمود نے کہا کہ کمزور پالیسیوں کی وجہ سے برآمدات میں مسلسل کمی کے ساتھ ساتھ درآمدات اور برآمدات میں فرق اتنا زیادہ بڑھ گیا جوہمارے لئے خطرے کی گھنٹی ہے انہوں نے کہا کہ تجارتی حجم میں کمی کی بڑی وجہ پالیسیوں میںتسلسل کا فقدان اور کاسٹ آف ڈوئنگ بزنس میں غیر معمولی اضافہ ہے انہوں نے کہا کہ اس وقت بجلی اور گیس کے ریٹ پورے ریجن میں سب سے زیادہ ہیں جس کی وجہ سے ہماری مصنوعات عالمی منڈیوں میںدیگر ملکوں کی مصنوعات کا مقابلہ نہیں کر پارہیں اور ان میں مسلسل کمی آرہی ہے ۔

متعلقہ عنوان :