چین کا شمالی و جنوبی کوریائی رہنماؤں کی ملاقات کا خیر مقدم

جمعہ اپریل 21:51

بیجنگ ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 اپریل2018ء) چین نے شمالی و جنوبی کوریائی رہنماؤں کی ملاقات کا خیر مقدم کرتے ہوئے اسے ایک تاریخی لمحہ قرار دیا ہے۔ جمعہ کو چینی وزارتِ خارجہ کی ترجمان نے ایک بیان میں کہا ہے کہ بیجنگ حکومت امید کرتی ہے کہ اب خطے میں پائیدار استحکام کا نیا دور شروع ہو گا۔ چین شمالی کوریا کا اہم اتحادی ہے تاہم اس نے امریکا کی جانب سے پیانگ یانگ پر عائد کردہ پابندیوں کی حمایت بھی کی ہے۔

ترجمان نے کہاکہ بیجنگ جوہری تنازعے کے پر امن حل پر زور دیتا رہا ہے۔

(جاری ہے)

شمالی اور جنوبی کوریائی ریاستوں کے اعلیٰ ترین رہنماؤں کی تاریخی ملاقات جمعہ کو ہوئی۔ جنوبی کوریائی صدر مٴْون جے اِن سے ملاقات کے لیے کمیونسٹ شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ اٴْن پہلی بار جنوبی کوریا پہنچے تھے۔ رپورٹس کے مطابق اس ملاقات میں دونوں لیڈروں نے ایٹمی ہتھیاروں کے خاتمے کے علاوہ قیام امن کے امکانات پر بھی بات چیت کی۔ جنوبی کوریائی صدر کے دفتر کے ایک ترجمان نے بعد ازاں بتایا کہ صدر مٴْون جے اِن اور شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ اٴْن نے جزیرہ نما کوریا کو غیر ایٹمی خطہ بنانے کے موضوع پر انتہائی سنجیدگی سے تبادلہ خیال کیا۔

متعلقہ عنوان :