راولپنڈی،199 ملین ر وپے کی لاگت سے ما ڈل مو یشی با زار گو ندل ا علیٰ معیا ر کا نمونہ ہو گا،ند یم اسلم چو ہد ری

مو یشی منڈ ی کے قیام کا مقصد مویشی پال حضر ات کو ٹھیکے دا روںکی فیس سے بچا نا ہے،کمشنر را ولپنڈی ڈویثرن

جمعہ اپریل 23:46

راولپنڈی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 اپریل2018ء) کمشنر را ولپنڈی ڈویثرن ند یم اسلم چو ہد ری نے کہا ہے کہ 199ملین ر وپے کی لاگت سے ما ڈل مو یشی با زار گو ندل تکمیل کے مراحل میں ہے یہ بازاراعلیٰ معیا ر کا نمونہ ہو گا جس میں سڑکیں، شیڈز اور بلڈنگ کے سا تھ سیو ر یج سسٹم، و یٹرنری ہسپتا ل، چارہ کی دکا نیں،گروسری شاپ،مسجد،ٹیوب ویل اور آکشن ر نگ سمیت دیگرسہو لیات بھی د ستیاب ہو ں گی اجلا س میں ر یجنل پو لیس افسر فخر وصال سلطان راجہ، وا ئس چا نسلر پیرمہر علی شاہ یو نیو ر سٹی ثروت مرزا ،ڈ پٹی کمشنرراولپنڈی طلعت محمو دگوندل، ڈپٹی کمشنر اٹک را نا اکبر حیات ،ڈ ی سی جہلم عبدالستار عیسانی ، ڈی سی چکو ال غلام صغیر ، ایڈیشنل کمشنر کو ا ٓر ڈ ی نیشن طا رق سلا م مروت،ڈا ئر یکٹر لا ئیو سٹا ک شا ہد سجاد، ایم ڈی کیٹل مارکیٹ محمد یونس کے علاوہ دیگر افسران نے شرکت کی کمشنر نے کہاکہ ماڈ ل بازار اپنی تکمیل کے اختتامی مرا حل میں ہے انہوں نے کہا کہ حکو مت پنجاب کی جا نب سے کسا نو ں کی فلا ح کے لئے بے شما ر انقلا بی اقدا مات کے ساتھ انہیں مفت مویشی منڈ یا ں فراہم کرنے لئے چھو ٹے مو یشی بازاروں کے علا وہ ضلع اٹک میں ما ڈل مو یشی با زار گوندل کے لئے 199ملین ر وپے مختص کئے ہیں جس کی تکمیل سے مو یشی پا ل افراد کو مفت منڈ یو ں کی فر اہمی کے ذر یعے ر یلیف فرا ہم کیا جا ئے گاانہوں نے کہا کہ مو یشی منڈ ی کے قیام کا مقصدکسا نو ں اور مویشی پال حضر ات کو ٹھیکے دا روںکی فیس سے بچا نا ہے تا کہ وہ اپنی محنت کی کمائی کو صر ف اپنے ہی مصر ف میں لائیں اس سلسلے میں ضلعی انتظا میہ کی جا نب سے کئے جا نے والے اقدامات قا بل ستا ئش ہیں جنہوں نے کنٹر یکٹر اور بلڈ نگ ڈ یپا ر نمنٹ کی جانب سے مو صو ل ہو نے والی شکایات کے نتیجے میں سا ئٹ پر سے تجا وزات کے فوری خا تمے کے لئے اقدامات کئے ایم ڈی کیٹل مارکیٹ محمد یو نس نے اس مو قع پر این ایچ اے کی جا نب سے این او سی جا ری نہ کر نے کی و جہ سے پیش آ نے والی مشکلات کے بارے میں آ گاہ کر تے ہو ئے اس سلسلے میں بورڈ کو ہدا یات جا ری کر نے کی استدعا کی جس پر بورڈ کی جا نب سے اس مسئلے کو جلد از جلد حل کر نے کی یقین دہا نی کر وا ئی گئی۔

متعلقہ عنوان :