مالی سال 2018,19ء کا بجٹ پیش ہو چکا‘ یہ بحث ختم ہو جانی چاہیئے کہ بجٹ کتنے عرصے کا پیش کیا جانا چاہیئے تھا‘ قیصر احمد شیخ

جمعہ اپریل 23:36

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 اپریل2018ء) وزارت خزانہ کی سٹینڈنگ کمیٹی کے چیئرمین قیصر احمد شیخ نے کہا ہے کہ مالی سال 2018,19ء کا بجٹ پیش ہو چکا اس لیے اب یہ بحث ختم ہو جانی چاہیئے کہ بجٹ کتنے عرصے کا پیش کیا جانا چاہیئے تھا اور ویسے بھی پاکستان مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے ملکی آئین و قانون کے عین مطابق ہی یہ بجٹ پیش کیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعہ کو پی ٹی وی کے ایک پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ روز پیش کیے جانے والے بجٹ میں عوام پر کسی قسم کا کوئی اضافی ٹیکس نہیں لگایا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ گزشتہ دنوں میں نے بجٹ کے سلسلے میں امریکہ سمیت اسپین کے سفیروں سے بھی بات کی جس میں انہوں نے مجھے بتایا کہ ہمارے ہاں اگر ایسے حالات ہوں تو گزشتہ سال کے بجٹ کو ہی جاری رکھا جاتا ہے کیونکہ وہ پہلے ہی سے منظور شدہ بھی ہوتا ہے لیکن ہماری موجودہ حکومت نے پورے سال کا بجٹ پیش کرنا زیادہ بہتر سمجھا اس لیے یہ بجٹ پیش کر دیا گیا۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت نے بہت سے ایسے کام کیے ہیں جن سے کرپشن میں کمی آئے گی جبکہ جائیداد کی اصل مالیت والے کام کا ملکی معیشت پر بہت زیادہ اثر پڑے گا۔ قیصر احمد شیخ کا کہنا تھا کہ حالیہ بجٹ عوام دوست ہے جس میں ملک و قوم کے مفاد کو ترجیح دی گئی ہے تاکہ ملک مزید آگے بڑھے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کی حکومت عوامی فلاح و بہبود کے لیے موثر طریقے سے کام جاری رکھے ہوئے ہے۔

متعلقہ عنوان :