پختونوں کی مسلسل ٹارگٹ کلنگ مستقبل میں بڑی تباہی کا باعث بن سکتی ہے، اسفندیار ولی خان

جمعہ اپریل 23:36

چارسدہ ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 اپریل2018ء) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان نے کہا ہے کہ عمران خان نے سیاست سے شائستگی کا جنازہ نکال دیا ہے اور نوجوان نسل کو گالم گلوچ کی سیاست منتقل کر رہے ہیں، حکومت اپنی مدت پوری کرنے کے قریب ہے تاہم عوام اب ان کے دھوکے میں نہیں آئیں گے تبدیلی کا سارا پول کھل گیا ہے ، پرویز خٹک آئے روز اے این پی کو کرپٹ کہتے رہے لیکن یہ نہیں بتایا کہ ساڑھے چار سال تک اسی حکومت میں وزیر کیوں رہی اسفندیار ولی خان نے کہا کہ اے این پی کا کوئی ایم این اے ، ایم پی اے، سینیٹر یا وزیر پر نیب کا کوئی کیس نہیں ہے جبکہ اس کے بر عکس اے این پی پر الزام لگانے والوں کے خلاف تحقیقات کا آغاز ہو چکا ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے چارسدہ میں یوسی خانمائی، یوسی درگئی اور دوسہرہ کے مشترکہ ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

(جاری ہے)

اسفندیارولی خان نے کارکنوں کو ہدایت کی کہ باچا خان کے سپاہی کسی کی ذات پر کیچڑ نہیں اچھالتے، انہوں نے کہا کہ حلفیہ اقرار کرتا ہوں کہ میرے پاس وراثت کے علاوہ میرے خاندان کے کسی فرد کی کوئی جائیداد یا اثاثے ثابت ہو جائیں تو پھانسی پر چڑھنے کو تیار ہوں، چارسدہ کے عوام پر ایک قرض باقی ہے اور امید ہے کہ وہ آئندہ الیکشن میں وہ قرض ضرور اتاریں گے، پاکستان کی70سالہ تاریخ میں صرف اے این پی نے اپنے دور میں چارسدہ میں ترقیاتی کام کئے اور تعلیمی میدان میں جو اصلاحات کیں وہ تاریخ کا روشن باب ہیں۔

انہوں نے کیو ڈبلیو پی کا ذکر کیا اور کہا کہ کہ قومی وطن پارٹی اور تحریک انصاف کے درمیان بچوں کا کھیل جاری رہا دوبار کرپشن کی بنیاد پر دو بار حکومت سے نکالی جانے والی کیو ڈبلیو پی سینیٹ الیکشن میں پھر آنکھ مچولی کرتی نظر آئی ،انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی نے سینیٹ الیکشن میں مولانا سمیع الحق کے ساتھ بھی دھوکہ کیا ،کپتان یو ٹرن کے ماسٹر ہیں اور دن میں کئی بار اپنا مؤقف بدلتے ہیں، پختونوں کے صوبے کی شناخت اور این ایف سی ایوارڈ ا ولی خان بابا کی وصیت تھی اور اے این پی نے اپنے دور میں ان کی وصیت کو عملی جامہ پہنایا ، انہوں نے کہا کہ اٹھارویں ترمیم کی حفاظت کریں گے کیونکہ یہ اے این پی کا تاریخی کارنامہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ انتخابات سے قبل فاٹا کو صوبے میں ضم کیا جائے، فاٹا انضمام کے بعد شمالی و جنوبی پختونوں کی ایک وحدت بنانے کیلئے کوششیں کریں گے،آئی ڈی پیز کی باعزت واپسی اور ان کے نقصانات کا جلد از جلد ازالہ کیا جائے انہوں نے فاٹا میں مائنز کی صفائی کا کام تیز کرنے کابھی مطالبہ کیا۔