حکومت نے مناسب بجٹ پیش کیا،اسٹیک ہولڈرز کی تجاویز کو پذیرائی نہیں دی گئی ‘ آل پاکستان انجمن تاجران

ودہولڈنگ ٹیکس کے خاتمے کے دیرینہ مطالبے کو نظر انداز کیا گیا ِ،اس حوالے سے خصوصی نظرثانی کی جائے صدر اشر ف بھٹی

ہفتہ اپریل 13:27

حکومت نے مناسب بجٹ پیش کیا،اسٹیک ہولڈرز کی تجاویز کو پذیرائی نہیں دی ..
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 28 اپریل2018ء) آل پاکستان انجمن تاجران کے صدر اشرف بھٹی نے وفاقی حکومت کی جانب سے آئندہ مالی سال کیلئے پیش کئے جانیوالے بجٹ کو مناسب قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ بجٹ سازوں نے اسٹیک ہولڈرز سے حاصل کی جانے والی تجاویز کو اس طرح پذیرائی نہیں دی جو انہیں ملنی چاہیے تھی ، پارلیمنٹ میں پیش کیا جانے والا بجٹ ابھی تجاویز ہیں اس لئے حتمی منظوری سے پہلے ود ہولڈنگ ٹیکس کے خاتمے کے مطالبے کو زیر غور لایا جائے ۔

آئندہ مالی سال کے بجٹ پر اپنے رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے انہوںنے کہا کہ حکومت کی جانب سے ٹیکس چھوٹ کی حد میں اضافہ اور اہم خام مال پر ریگولیٹری ڈیوٹی کے خاتمے کے اعلانات خوش آئندہیںلیکن مقامی سطح پر ایسے بہت سے شعبے ہیں جنہیں اس طرح ریلیف نہیں مل سکا جس کی ضرور ت تھی ۔

(جاری ہے)

ہماری تجاویز تھی کہ ٹیکس وصولیوں میں چور راستوں کو روکنے کیلئے شرح کم کرکے فکس ٹیکس کا نظام لایا جائے ۔

رواں مالی سال کے لیے 3935ارب کی محاصل وصولی تاجروں کی بدولت ممکن ہوئی ہے ،حکومت کو چاہیے تھاکہ تاجروں کے لئے مراعات کا اعلان کرتی ۔اشرف بھٹی نے کہا کہ حکومت کو چاہیے تھاکہ شفافیت کے ساتھ یہ بھی بتاتی کہ بجٹ خسارے سے کیسے نمٹا جائے گا کیونکہ اس کے بغیر بہت سے معاملات پیچیدگیوں کا شکار رہیں گے۔ بینک ٹرانزیکشن پر ودہولڈنگ ٹیکس کا خاتمہ کاروباری برادری کا دیرینہ مطالبہ تھا جسے یکسر نظر اندازکردیا گیا، ہمارا مطالبہ ہے کہ اسے بجٹ منظوری سے قبل زیر غور لایا جائے اور غیر منصفانہ ٹیکس کوہر صورت واپس ہونا چاہیے ۔

متعلقہ عنوان :