سیاحت کے فروغ کیلئے حکومت کے ساتھ پرائیویٹ سیکٹرکوبھی آگے آناہوگا ،ْصدر آزاد کشمیر

پاک چائینہ اقتصادی راہداری کے تحت پاکستان کادوسرابڑا پراجیکٹ’’ صنعتی زون‘‘ میرپورمیں بنے گا جہاں بین الاقوامی سرمایہ کارآئیں گے ،ْمقبوضہ کشمیرکی آزادی اورحق خودارادیت کیلئے آزاد کشمیر کی حکومت اور عوام ہرممکن جدوجہد جاری رکھیںگے ،ْ سر دار محمد مسعودخان کا جشن بہاراں میلہ کی افتتاحی تقریب سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب

ہفتہ اپریل 14:08

میرپور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 28 اپریل2018ء) آزادکشمیرکے صدرسردارمحمدمسعود خان نے کہاہے کہ سیاحت کے فروغ کیلئے حکومت کے ساتھ پرائیویٹ سیکٹرکوبھی آگے آناہوگا ،ْپاک چائینہ اقتصادی راہداری کے تحت پاکستان کادوسرابڑا پراجیکٹ’’ صنعتی زون‘‘ میرپورمیں بنے گا جہاں بین الاقوامی سرمایہ کارآئیں گے ،ْمقبوضہ کشمیرکی آزادی اورحق خودارادیت کیلئے آزاد کشمیر کی حکومت اور عوام ہرممکن جدوجہد جاری رکھیںگے ۔

وہ جشن بہاراں میلہ کی افتتاحی تقریب سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کررہے تھے۔ تقریب سے آزادکشمیرکے وزیراطلاعات،سیاحت وآئی ٹی مشتاق احمدمنہاس،سیکرٹری اطلاعات،سیاحت وآئی ٹی محترمہ مدحت شہزاد، ڈائریکٹر جنرل سیاحت سردارجاوید ایوب نے بھی خطاب کیاجبکہ اس موقع پر ڈپٹی کمشنر سردارعدنان خورشید خان، ایس ایس پی سید ریاض حیدربخاری، چیئرمین فیسٹیول کمیٹی /ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرجنرل راجہ محمدفاروق اکرم خان، اسسٹنٹ ڈائریکٹرسیاحت طارق محمود ملک،مختلف کمیٹیوں کے ممبران و اراکین، عوام الناس، خواتین اور بچوں کی بڑی تعداد شریک تھی۔

(جاری ہے)

صدر آزاد کشمیر نے کہا کہ ریاست جموںوکشمیر قدرتی لحاظ سے دنیاکا خوبصورت علاقہ ہے۔ حکومت جہاں آزادکشمیرمیں دیگرشعبوں میںترقی کررہی ہے وہاں سیروسیاحت کی صنعت کیلئے ٹورازم کوریڈورکے تحت 200 کلومیٹر سڑک بنائی جارہی ہے جوآزادکشمیرکے تمام خوبصورت اور سیاحتی مقامات سے ہوکرگزرے گی۔ سیاحت کے فروغ کیلئے حکومت کے ساتھ ساتھ پرائیویٹ سیکٹرکوبھی آگے آناہوگا۔

پاک چائینہ اقتصادی راہداری کے تحت پاکستان کادوسرابڑا پراجیکٹ’’ صنعتی زون‘‘ میرپورمیں بنے گا جہاں بین الاقوامی سرمایہ کارآئیں گے۔ سی پیک کے تحت مانسہرہ مظفرآباد،میرپور ایکسپریس وے بھی میرپورسے گزرے گی اور میرپورمیں بننے والافائیوسٹارہوٹل بھی پاکستان کابہترین ہوٹل ہوگا جوواٹرسپورٹس کی سرگرمیوں کواجاگرکرے گا۔ان تمام اقدامات سے سیاحت اور معیشت پربڑے مثبت اثرات مرتب ہونگے۔

محکمہ سیاحت کے زیراہتمام جشن بہاراں میلہ نے اہلیان میرپورکے چہروں کی رونقیں بحال کی ہیں اور لوگوں کامیلے میں بھرپورجوش وخروش ہے۔ اس طرح کے ثقافتی میلے آئندہ باقاعدگی سے ہونے چاہئیں تاکہ لوگوں کوصحت مندانہ تفریح کی سہولیات بھی میسر آسکیں۔ اس پارکشمیری عوام مقبوضہ کشمیرکے ان بھائیوں کوبھی یاد کرتے ہیں جو گذشتہ 70 سالوں سے بھارتی ظلم اور بربریت کاسینہ سپرہوکرمقابلہ کررہے ہیںاور وہاں تفریح کی کوئی سہولت نہیں ہے۔

مقبوضہ کشمیرکی آزادی اورحق خودارادیت کے لیے آزاد کشمیر کی حکومت اور عوام ہرممکن جدوجہد جاری رکھیںگے ۔ صدرآزادکشمیرسردارمحمدمسعود خان نے کہاکہ ریاست جموںوکشمیر دوحصوں میںبٹی ہوئی ہے۔ ریاست کا مقبوضہ حصہ مظلوم اور محکوم ہونے کے باوجود خوبصورت ترین ہے۔ دنیابھر سے کشمیرجنت نظیر کولوگ دیکھناچاہتے ہیں تاہم مقبوضہ علاقہ میں سیاحوں کے لیے کوئی رسائی نہیں ہے اس کے برعکس آزادعلاقہ میں حکومت سیروسیاحت کی صنعت کے فروغ کے لیے عملی اقدامات اٹھارہی ہے ۔

نیلم جہلم ویلی اورراولاکوٹ میں سیاح صرف گرمیوں میں جاتے ہیں جبکہ ڈویژن میرپورمیں چاروں موسموں میںسیاحوں کی رسائی ممکن ہے۔ سیاحوں کے لیے حکومت نے پہلے مرحلے میں پاکستان اور آزادکشمیر کوملانے والی سڑکات اور اضلاع سے اضلاع کوملانے والی سڑکوں کونہ صرف پختہ کیاہے بلکہ معیاری سڑکیں تعمیر کی ہیں۔ خوبصورت ،تاریخی اور آثارقدیمہ ہماراورثہ ہیں۔

انھوں نے کہاکہ میرپور ایک منصوبہ بندی کے تحت قائم ہوا۔یہاں کی قدیم تہذیب وثقافت لوک ورثہ ،پرانے میرپور،آثارقدیمہ اور تاریخی مقامات تک رسائی کویقینی بنایاجائے۔ میرپور عظیم اولیاء اللہ کی دھرتی ہے یہاں لاکھوں کی تعداد میں زائرین آتے ہیں۔ میرپورکی اپنی بھی ایک تاریخی اور ثقافتی پہچان ہے اس سے بڑھ کرمنگلاجھیل پانی کابڑاذخیرہ ہے جوسیاحوں کے لیے پرکشش مقام ہے۔ منگلا جھیل کوسیاحت کامرکز ہوناچاہیے۔