ہزاروں غیرملکی طلبہ پاکستانی مدارس میںایڈمیشن کیلئے تعلیمی ویزوںپرپابندی کے خاتمے کے منتظر ہیں،مفتی محمدنعیم

جامعہ بنوریہ عالمیہ کے ساتھ ہر ممکن تعاون کے علاوہ طلبہ کے اسٹڈی ویزوں کیلئے اعلیٰ حکام سے بات کریں گے،ہیڈ آف پالیسی اینڈ پلاننگ تھائی لینڈ

ہفتہ اپریل 19:24

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 28 اپریل2018ء) تھائی لینڈ کی وزارت تعلیم کے 12رکنی وفد کا جامعہ بنوریہ عالمیہ کا دورہ ، جامعہ کے مہتمم مفتی محمدنعیم اور تھائی لینڈ کے طلبہ سے ملاقات اور تھا ئی لینڈ کے طلبہ میں تحائف تقسیم کیے، اس موقع پر جامعہ بنوریہ عالمیہ کے نائب مہتم مولانا نعمان نعیم سمیت دیگر علماء کرام بھی موجودتھے۔جامعہ بنوریہ عالمیہ کے ترجمان کے مطابق ہفتہ کو ہیڈ آف پالیسی اینڈ پلانگ تھائی لینڈ،، چتّپھان ماکسسپھان (Chettaphan Maksamphan)کی سربراہی میں وفد جامعہ بنوریہ عالمیہ میں آیا وفد میں ہیڈ آف کلچر تھا ئی لینڈ، پھاست چدابدھی،(phasit chudabuddhi)سمیت تھا ئی لینڈ کے قونصل جنرل،3خواتین سمیت 12ارکان شامل تھے ۔

معزز مہمانوں کو نائب رئیس الجامعہ نے جامعہ کے ملکی وغیر ملکی مختلف شعبہ جات شعبہ حفظ ، وکتب ،دورہ حدیث ، دارالافتا ، جدید کمپوٹر لیب ، کچن کا معائنہ کیا۔

(جاری ہے)

اس موقع پرمعزز مہمانوں نے زیر تعلیم تھالینڈی طلبہ کے ساتھ پر ظہرانے میں شرکت کی اور ان میں تحائف بھی تقسیم کیے ۔ اس موقع پررئیس وشیخ الحدیث مفتی محمدنعیم نے وفد سے گفتگوکرتے ہوئے جامعہ بنوریہ عالمیہ میں زیر تعلیم تھائی لینڈین طلبہ کی خصوصی تعریف کی اور کہاکہ طلبہ کی تعلیم سے ہٹ کر دوسری کوئی مصروفیت نہیں ہوتی، ان طلبہ سے اساتذہ اور جامعہ کی انتظامیہ انتہائی مطمئن ہے کیونکہ یہ مدرسے کے قواعد وضوابط کی مکمل پاسداری کرتے ہیں۔

انہونے مزید کہاکہ دینی مدارس تعلیم کے ساتھ طلبہ کو خورا ک رہائش ودیگر سہولیات فراہم کرتی ہے ، اور پاکستان میں مدارس کاکردار حقیقی این جی اوز کا ہے ، یہ تمام کام بغیر کسی حکومتی تعاون کے کیے جاتے ہیں،انہوںنے کہاکہ اگر مدارس کے طلبہ کے ویزوں پر پابندی عائد نہ ہوتی تو بیرون ممالک میں ہزاروں کی تعداد میں طلبہ پاکستان میں دینی تعلیم حاصل کرنے کی خواہش رکھتے ہیں معلوم نہیں کن وجوہات کی وجہ سے سابق آمر جنرل مشرف کی عائد پابندی کو حکومت نے تاحال برقرار رکھاہے آج غیرملکی ہزاروں طلبہ پاکستانی مدارس میں ایڈمیشن کیلئے تعلیمی ویزوںپرپابندی کے خاتمے کے منتظر ہیں، مفتی محمدنعیم۔

اس موقع پر وفد کے سربراہ ہیڈآف پالیسی اینڈ پلانگ تھالینڈ،چتّپھان ماکسسپھان(Chettaphan Maksamphan) نے جامعہ بنوریہ عالمیہ کی دینی اور عصری علوم کی تدریس کے حسین امتزاج کو سراہتے ہوئے کہاکہ پاکستان کے مدارس تعلیم کو بے لوث ہوکر عام کررہے ہیں ،پاکستانی مدارس کی تعلیمی خدمات قابل تحسین ہیں بالخصوص بنوریہ کی عالمی سطح پرتعلیمی خدمات قابل تعریف ہیں، تھا ئی لینڈ کے والدین جامعہ بنوریہ کو اپنی اولاد کیلئے گھر سمجھتے ہیں آپ کی جانب سے شاندارتعلیمی انتظامات قابل تحسین ہیں ، میں اپنے قونصل جنرل کو ہدایت جاری کرتاہوں کہ وہ بنوریہ یونیورسٹی کے ساتھ ہر ممکن تعاون کرنے کی کوشش کریں ،طلبہ کے ویزے کے حوالے اعلیٰ حکام سے بات کریں گے ، کیونکہ بہت سے تھالینڈ کے طلبہ جامعہ بنوریہ عالمیہ میں پڑھنے کی خواہش رکھتے ہیں ، قبل ازیں نائب رئیس مولانا نعمان نعیم نے معزز مہمانوں کو جامعہ بنوریہ عالمیہ آمد پر استقبال کیا اور پاکستان میں دینی مدارس کے کردارو نظام اور جامعہ کے تعلیم اور نصاب تعلیم کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دی جبکہ جامعہ بنوریہ میں زیر تعلیم غیر ملکی طلبہ کے نصاب تعلیم اور روز مرہ کے معمولات اور ان کو دی جانے والی سہولیات کے حوالے سے ڈاکومینٹریز بھی دیکھائی تھا ئی لینڈ کے طلبہ کے مسائل کے حوالے سے ان کو آگاہ بھی کیا۔