بجٹ عوام دوست ہے، چیلنج کرتا ہوں اس میں ایک لفظ بھی تبدیل نہیں ہوسکتا، وزیراعظم

یہ پاکستان کے مسائل کے حل کا بجٹ ہے، ٹیکس کی شرح آدھی کی گئی ،اس کی دنیا میں کوئی مثال نہیں، ٹیکس ریفامر پر تنقید کر نے والے خود بتائیں انہوں نے پچھلے پانچ سال میں کتنا ٹیکس دیا، جھوٹے وعدوں اور کسی کو گالی دینے سے کام نہیں بنتا،جو مرضی باتیں کرلیں کسی پر کوئی الزام نہیں،جیبیں بھرنے والے عوام کے لیے کچھ نہیں کرسکتے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا ٹنڈو جام میں گیس پروسیسنگ فیسیلٹی کی افتتاحی تقریب سے خطاب

ہفتہ اپریل 19:30

بجٹ عوام دوست ہے، چیلنج کرتا ہوں اس میں ایک لفظ بھی تبدیل نہیں ہوسکتا، ..
ٹنڈوجام(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 28 اپریل2018ء) وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ آئندہ حکومت بجٹ میں تبدیلی کرسکتی ہے لیکن چیلنج کرتا ہوں بجٹ میں ایک لفظ تبدیل نہیں کرپائیں گے،یہ عوام دوست اور پاکستان کے مسائل کے حل کا بجٹ ہے، ٹیکس کی شرح آدھی کی گئی جس کی دنیا میں کوئی مثال نہیں، ٹیکس ریفامر پر تنقید کر نے والے خود بتائیں پچھلے پانچ سال میں کتنا ٹیکس دیا، جھوٹے وعدوں اور کسی کو گالی دینے سے کام نہیں بنتا،جو مرضی باتیں کرلیں کسی پر کوئی الزام نہیں۔

ہفتہ کو ٹنڈو جام میں گیس پروسیسنگ فیسیلٹی کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ چیلنج کرتا ہوں ہم سے گیس،، بجلی اور سڑکوں پر مناظرہ کرلیں، بہت حکومتیں اور بڑے دعویدار موجود ہیں جوکہتے ہیں سندھ کی ترقی کے لیے بہت کام کیا۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ جووعدے کیے انہیں پورا کیا جارہا ہے، سندھ میں ہائی وے بھی نوازشریف اور (ن)لیگ نے بنائی، اس کی چوتھی اور پانچویں لین بھی ہم بنائیں گے، مشرف دور اور پیپلزپارٹی کے دور کے کام دیکھ لیں اور پھر (ن)لیگ کے بھی کام دیکھ لیں، کئی گنا فرق نظر آئے گا، یہ کام عوام کو نظر آتے ہیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ(ن)لیگ نے ثابت کیا کہ وہ ملک کی ترقی کے لیے کام کرتی ہے، جو مرضی باتیں کرلیں کسی پر کوئی الزام نہیں۔۔شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ جب حکومت آئی جو حالت بجلی گیس کی ملک میں تھی، انڈسٹری بند تھی، سی این جی اسٹیشن بند ہورہے تھے، ملک ایک بحران کی کیفیت میں تھا، امن و امان کی حالت یہ تھی کہ سندھ کے دیہی علاقوں میں سفر کرنا مشکل تھا، کراچی میں لوگ گھروں سے نکلنے سے گھبراتے تھے، یہ 2013 کی کیفیت تھی، جو شہر دنیا کے 5 خطرناک ترین شہروں میں شامل تھا آج وہاں ہوٹلوں میں جگہ نہیں ملتی اور سرمایہ کار آرہے ہیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ پچھلے ایک سال میں بہت سے لوگ باتیں کرتے رہے، حکومت ٹوٹ جائے گی اور چند دن کی مہمان ہے لیکن حکومت نے اپنی مدت پوری کی، منصوبے بھی پورے کیے، پاکستان کو ترقی بھی دی، ہم نے پانچ بجٹ پیش کیے، اسی کی بنیاد کو آگے بڑھاتے ہوئے پاکستان کی تاریخ کا عوام دوست بجٹ گزشتہ روز اسمبلی میں پیش کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ ایک بات کی تنقید ہوئی کہ حکومت کو یہ بجٹ پیش نہیں کرنا چاہیے، بجٹ پیش کرنا حکومت کا کام ہے، عوام نے مینڈیٹ دیا ہے، حکومت آخری دن تک کام کرے، یہ ملک سے انصاف نہیں کہ ہم بغیر کسی بجٹ کے ملک کو چھوڑی دیں اور ملک 4 ماہ بند پڑا رہے، آئندہ حکومت بجٹ میں تبدیلی کرسکتی ہے لیکن چیلنج کرتا ہوں بجٹ میں ایک لفظ تبدیل نہیں کرپائیں گے، یہ عوام دوست اور پاکستان کے مسائل کے حل کا بجٹ ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ ٹیکس کی شرح آدھی کی گئی جس کی دنیا میں کوئی مثال نہیں، جو ٹیکس ریفامر پر تنقید کرتے ہیں وہ پہلے بتائیں پچھلے پانچ سال میں کتنا ٹیکس دیا، جو ٹیکس نہیں دیتے انہیں ڈر ہے وہ اب ٹیکس نیٹ میں آئیں گے اور انہیں ٹیکس دینا پڑے گا، حکومت ان لوگوں کا پیچھا کرے گی جو ٹیکس ادا نہیں کرتے، ان کی وجہ سے غریب پر ٹیکس کا بوجھ پڑتا ہے، وہ لوگ جو ٹیکس ادا نہیں کرتے وہ بجٹ کے مخالف ہیں لیکن بجٹ پاس ہوگا اور اسی سے پاکستان کی معیشت مضبوط ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ ہمیشہ سنتے آئے تھے تھر میں بہت کوئلہ ہے، ریکوڈک میں کاپر اور سونے کے ذخائر ہیں، کے پی اور آزاد کشمیر میں ہائیڈروپاور ہے، اگر یہ حکومت کام نہ کرتی تو تھر کا کوئلہ زمین میں ہی رہتا، سی پیک کیحوالے سیکول کی ڈیولپمنٹ ہورہی ہے اور پاور پلانٹ لگ رہے ہیں، جو کوئلہ جب سے دنیا بنی زمین میں پڑا رہا اسے آج نکالا گیا اب یہ ملک کے استعمال میں آئے گا، کوشش ہے ریکوڈک بھی پاکستان کے کام آئے، اس کے لیے بلوچستان حکومت کو کہا ہے کہ وفاقی حکومت آپ کی مدد کرنا چاہتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ خوشی ہے پاکستان کی تاریخ کی پہلی واٹر پالیسی پر اتفاق ہوا، اس پر کام شروع کردیا گیا ہے، جب سے پاکستان بنا 500 کلو میٹر موٹروے ہم نے بنائی جسے آج 1700 کلو میٹر کیا جارہا ہے، ہم نے گن کر 10 ہزار میگاواٹ بجلی لگائی، ہمارے کاموں کی ختم نہ ہونے والی لمبی فہرست ہے۔۔شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ جھوٹے وعدوں اور کسی کو گالی دینے سے کام نہیں بنتا، یہ نوازشریف اور(ن)لیگ ہے جس نے شرافت اور خدمت کی سیاست کی، آج عوام کو کام کرکے دکھایا، اب فیصلہ بھی عوام نے کرنا ہے۔