مسلم کانفرنس مظفرآباد کے صدر پیر سید غلام مرتضی گیلانی کی راجہ قیصر اشرف کے قتل کی شدید الفاظ میں مذمت

ہفتہ اپریل 19:46

مظفرآباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 28 اپریل2018ء) آل جموںوکشمیر مسلم کانفرنس ضلع مظفرآباد کے صدر وسابق وزیر حکومت پیر سید غلام مرتضی گیلانی نے راجہ قیصر اشرف کے قتل کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ آزادکشمیر یونیورسٹی کے چانسلر سردار مسعود خان کی نااہلی اورناکامی کی وجہ سے یونیورسٹی کے اندر کھلم کھلا دہشت گردی جاری ہے۔

انہوں نے کہا کہ کئی ہفتوں سے میں اخبارات کے ذریعے یونیورسٹی کے اندر ہونی والی غلطیوں کی نشاندہی کی اور صدر آزادکشمیر سردار محمد مسعود خان کے نوٹس میں بذریعہ میڈیا لائی گئی لیکن اُن کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگی یونیورسٹی کے اندرایسے دہشتگرد اسلحہ لیکر گھومتے ہیں مگر اُن کی روکنے والا کوئی بھی نہیں صرف یونیورسٹی کے اندر میرٹ اور کرپشن کا بول بالا ہے اس کے علاوہ یونیورسٹی کے کسی بھی معاملات کے بارے میں کسی کوکوئی علم نہ ہے ۔

(جاری ہے)

راجہ قیصر اشرف کو فائرنگ کرکے سرعام قتل کیا ہے اس طرح کی لرزہ خیزوارداتیں کو بھارتی فوج کشمیری طلباء کے ساتھ روا رکھے ہوئے ہے۔مسلم کانفرنس اس بیہمانہ قتل کی بھرپور مذمت کرتی ہے اور حکومت آزادکشمیراور قانون نافذ کرنے والے ادارہ جات سے مطالبہ کرتی ہے کہ راجہ قیصر کے قاتلوں کو جلداز جلد گرفتار کیاجا ئے ،آزادکشمیر کے پرامن ماحول کوخراب کرنے سے بازرہیںاور تعلیمی اداروں کے اندر غنڈہ گردی کی روک تھام کرے تاکہ اور مزید حالات کو بگڑنے سے روکیں،۔

تعلیمی اداروں میں اگر اس طرح کے دہشتگردی کا نظام برقرار رہا تو کوئی بھی غریب یا امیر بچ نہیں سکتا ،مظفرآبادکو لیاری بننے سے بچایا جائے ۔راجہ قیصر اشرف کے قاتلوں کو کڑی سے کڑی سزا دی جائے تاکہ تعلیمی اداروں کا ماحول آئندہ خراب نہ ہوسکے ۔اگر اس بار بھی اس دہشتگرد کو چھوڑ دیا تو میں سمجھتا ہوں کے مظفرآباد کے اندر ایسے واقعات دوبارہ بھی جنم لیں گے اس لیے اداروں کو چاہیے کہ اس دہشتگرد کو گرفتار کرکے کڑی سے کڑی سزا دی جائے تاکہ دیگر دہشتگرد بھی سبق سیکھ سکیں ۔

انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی کے گیٹ پر بیٹھے سیکورٹی گارڈ بھی سرکاری تنخواہیں لے رہے ہیں اُن کو چاہیے کہ وہ بھی ہر بچہ کو چیک کر کے اندر جانے کی اجازت دیں ،یونیورسٹی اور دیگر کالجوں کو بھی چاہیے کہ ہر بچے پر نظررکھتے ہوئے اُس کی اچھی طرح تلاشی لیکر اُسے سکول ،کالج یایونیورسٹی کے گیٹ سے اندر داخل کریں چاہیے اُس میں غریب کا بیٹا ہے یا کسی امیر کا بیٹا ہے ہر کسی کو اپنی اپنی جان پیاری ہے۔اُنہوں نے اعلیٰ اداروں سے اپیل کی ہے کہ مظفرآباد شہر کے اندر جتنے بھی تعلیمی ادارے ہیں ان کی سکیورٹی کو چیک کیا جائے اور جن سکولوں کالجوں میں سیکورٹی کا کوئی نظام نہ ہے اُن کو فوری طور پر سیل کیا جائے ۔