پاکستان پیپلز پارٹی کے تحت (کل) ٹنکی گراؤنڈ ایف سی ایریا لیاقت آباد میں عوامی جلسہ عام منعقد کیا جا ئے گا

جلسے سے پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری خطاب کریں گے ۔ جلسے کے حوالے سے انتظامات کو حتمی شکل دے دی گئی

ہفتہ اپریل 19:58

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 28 اپریل2018ء) پاکستان پیپلز پارٹی کے تحت کل اتوار کو ٹنکی گراؤنڈ ایف سی ایریا لیاقت آباد میں عوامی جلسہ عام منعقد کیا جا ئے گا ۔ اس جلسے سے پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری خطاب کریں گے ۔ جلسے کے حوالے سے انتظامات کو حتمی شکل دے دی گئی ہے ۔ جلسے کے موقع پر سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے جائیں گے ۔

جلسے کی تیاریوں کے حوالے سے ہفتے کو رات گئے تک پیپلز پارٹی کے تحت ریلیاں نکالی گئیں ۔ جیالوں نے پارٹی ترانوں پر رقص کیا اور نعرے بازی کی ۔ پیپلز پارٹی کے تحت مرکزی استقبالیہ کیمپ الکرم اسکوائر لیاقت آباد پر قائم کیا گیا ہے ۔ پیپلز پارٹی کراچی شعبہ خواتین کے تحت جلسہ گاہ میں مختلف اسٹالز کا انعقاد کیا گیا ، جہاں جلسہ گاہ میں موجود خواتین اور لڑکیوں میں چوڑیاں اور پارٹی جھنڈے تقسیم کیے گئے ۔

(جاری ہے)

خواتین کارکنان نے اپنے چہروں پر فیس پینٹنگ کروائی اور اس پینٹنگ کے ذریعہ انہوں نے اپنے چہروں پر پیپلز پارٹی جھنڈے بنوائے جبکہ خواتین نے اپنے ہاتھوں پر مہندی بھی لگوائی ۔ جلسہ گاہ میں رات گئے جشن کا سماں تھا ۔ اس موقع پر آتش بازی بھی کی گئی ۔ پیپلز پارٹی کی مرکزی رہنما شیری رحمن ، وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ ،، نثار کھوڑو ، وقار مہدی ، سعید غنی ، جاوید ناگوری ، نفیسہ شاہ ، شاہدہ رحمانی اور دیگر نے جلسہ گاہ کا دورہ کیا ۔

پیپلز پارٹی سندھ کے سیکرٹری جنرل وقار مہدی اور سعید غنی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ جلسے کے تمام انتظامات کو مکمل کر لیا گیا ہے ۔ جلسہ گاہ میں 30 ہزار کرسیاں لگائی ہیں ۔ جلسہ گاہ کا اسٹیج 120 لمبا ، 40 فٹ چورا اور 24 فٹ اونچا ہے ۔ جلسہ گاہ میں داخلے کے لیے مختلف راستے بنائے گئے ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ جلسے کی تیاریوں کے حوالے سے تمام انتظامات کو حتمی شکل دے دی گئی ہے ۔

اس حوالے سے مختلف کمیٹیاں جلسے کے انتظامات کی نگرانی کریں گی ۔ وقار مہدی نے بتایا کہ پیپلز پارٹی 44 سال بعد لیاقت آباد میں اپنی سیاسی طاقت کا مظاہرہ کر رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ آج سے 44 برس قبل پارٹی کے بانی چیئرمین ذوالفقار علی بھٹو نے لیاقت آباد سپر مارکیٹ کا افتتاح کیا تھا ، جس میں انہوں نے عوامی اجتماع سے خطاب کیا تھا۔ اس کے علاوہ سابق وزیر اعظم بے نظیر بھٹو تین مرتبہ ضلع وسطی کا دورہ کر چکی ہیں ۔

وقار مہدی اور سعید غنی نے کہا کہ کراچی کے مسائل کی ذمہ دار ایم کیو ایم ہے ۔ جس کے پاس 30 برس شہر کا مینڈیٹ رہا ۔ ایم کیو ایم نے شہر میں نفرت ، بھتہ خوری اور جرائم کو فروغ دیا ۔ انہوں نے کہا کہ آج مختلف جماعتوں کے رہنماؤں اور عوام پیپلز پارٹی میں شامل ہو رہے ہیں ۔ آئندہ انتخابات میں پیپلز پارٹی کراچی سے بھرپور کامیابی حاصل کرے گی ۔

رات گئے پیپلز پارٹی کی مرکزی رہنما شیری رحمن نے جلسہ گاہ کا دورہ کیا اور میڈیا سے گفتگو میں انہوں نے کہا کہ آج پیپلز پارٹی کراچی میں تاریخی جلسہ کرے گی ، جس میں بلاول بھٹو اہم خطاب کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ اب کراچی میں ہر طرف آئندہ الیکشن میں تیر ہی تیر نظر آئے گا ۔ واضح رہے کہ لیاقت آباد کراچی کی سیاست اور متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کا سیاسی گڑھ سمجھا جاتا ہے ۔ تاہم ایم کیو ایم کی تقسیم کے بعد اس علاقے میں متحدہ کے علاوہ پی ایس پی اور اے پی ایم ایل اپنی سیاسی طاقت کا مظاہرہ کر چکے ہیں اور ان دنوں لیاقت آباد تمام اہم جماعتوں کی سیاسی سرگرمیوں کا مرکز بنا ہو اہے ۔