چیف جسٹس کے حکم پر جھنگ میں خاتون کا آپریشن کرنے والے دو عطائیوں کو احاطہ عدالت سے گرفتار کر لیا گیا

ہفتہ اپریل 20:01

چیف جسٹس کے حکم پر جھنگ میں خاتون کا آپریشن کرنے والے دو عطائیوں کو ..
لاہور۔28 اپریل(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 28 اپریل2018ء) چیف جسٹس پاکستان کے حکم پر جھنگ میں خاتون کا آپریشن کرنے والے دو عطائیوں کو احاطہ عدالت سے گرفتار کر لیا گیا۔۔۔چیف جسٹس نے دوران سماعت ریمارکس دیئے کہ کمرہ عدالت میں موجود ہر شخص کو ملزموں کی شکل دکھائی جائے جو انسانی جانوں سے کھیلتے رہے ہیں۔۔سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں عطائیوں کے خلاف از خود نوٹس کیس کی سماعت ہوئی۔

جھنگ پولیس نے بنیان پہن کر خاتون کا آپریشن کرنے والے دو ملزم ایوب اور حر اکو عدالت پیش کیا۔تفتیشی افسر نے عدالت کو آگاہ کیا کہ ملزم ڈاکٹر رفیق کے کلینک پر خاتون کا آپریشن کر رہے تھے۔۔ڈاکٹر رفیق پی ایم ڈی سی سے رجسٹرڈ ہے۔ملزم ایوب ہومیوپیتھک کا ڈپلومہ ہولڈر ہونے کے باوجود ایلوپیتھک کی ادویات دے رہا تھا۔

(جاری ہے)

عدالت نے مرکزی ملزم کی عدم گرفتاری پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر رفیق کو کیوں نہیں پکڑا گیا۔

چیف جسٹس نے ملزم ایوب اور حر کو احاطہ عدالت سے گرفتار کرنے کا حکم دیتے ہوئے آئندہ سماعت ڈاکٹر رفیق کوبھی پیش کرنے کا حکم دیدیا۔عدالت نے معاملہ ایف آئی اے کو بھجواتے ہوئے ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرنے کے بھی احکامات جاری کیے۔ سمبڑیال میں صحافی قتل کیس میں آئی جی پنجاب نے عدالت کو بتایا کہ مرکزی ملزم ابھی تک گرفتار نہیں کرسکے،،چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ آئی جی صاحب آپ جانتے ہیں کہ معاملہ کتنا اہم ہے، خود احساس کریں. پندرہ روز میں مرکزی ملزم گرفتار کریں عدالت نے غیر قانونی شادی ہالز کیس میں پنجاب حکومت کو ایل ڈی اے کی رپورٹ کی روشنی میں قانون سازی کی ہدایت کر دی۔