عوامی نیشنل پارٹی موجودہ بجٹ کو عوامی بجٹ نہیں کہہ سکتی کیونکہ چھوٹوں صوبوں کو وفاقی بجٹ میں نظرانداز کیا گیا، انجینئر زمرک خان اچکزئی

ہفتہ اپریل 20:14

کوئٹہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 28 اپریل2018ء) عوامی نیشنل پارٹی کے پارلیمانی لیڈر انجینئر زمرک خان اچکزئی نے کہا ہے کہ عوامی نیشنل پارٹی موجودہ بجٹ کو عوامی بجٹ نہیں کہہ سکتی کیونکہ چھوٹوں صوبوں کو وفاقی بجٹ میں نظرانداز کیا گیا ہے ہم سمجھتے ہیں کہ یہ بجٹ صرف پنجاب میں عام انتخابات میں نشستیں جیتنے کے لئے بنایا گیا ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے مختلف وفود سے بات چیت کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا ہے کہ وفاقی بجٹ صرف کاغذوں کا ہیر پیر ہیں اس میں عوام کے امنگوں کو مد نظر رکتھے ہوئے کچھ بھی نہیں رکھا گیا ملک کے بجٹ کا 72فیصد بجٹ دفاعی میں چلا جاتا ہیں باقی28فیصد میں نان ڈویلپمنٹ اور ڈویلپمنٹ کے لئے بچ جاتا ہیں وہ بھی کرپشن کی نظر ہوجاتی ہیں اس بجٹ میں عوام کے لئے کچھ نہیں ہے یہ سابقہ بجٹوں جیسا ہے انہوں نے کہا کہ وفاقی بجٹ میں عوام کو کوئی ریلیف نہیں دیا گیا اور نہ ہی بلوچستان کی ترقی اور خوشحالی کے لئے اقدامات اٹھائے ہیں مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے ہمیشہ ملک اور خاص کر بلوچستان کی عوام کے ساتھ بجٹ میں زیادتی کی ہے جب تک عوام کو ریلیف نہیں ملتا اس وقت تک بجٹ کو عوام دوست بجٹ نہیں کہہ سکتے انہوں نے کہا ہے کہ موجودہ بجٹ فراڈ ہے اور عوام کو بجٹ میں ریلیف نہیں دیا گیا اس لئے ہم اس کو مسترد کر تے ہیں انہوں نے کہا ہے کہ قلعہ عبداللہ ایک پسماندہ علاقہ ہے ماضی کے حکمرانوں نے قلعہ عبداللہ کی ترقی کے لئے کچھ نہیں کیا ہم سمجھتے ہیں کہ آئندہ آنیوالا دور عوامی نیشنل پارتی ہے اور ماضی کی طرح 2018 کے انتخابات کے بعد بھی ترقی وخوشحالی کے لئے اقدامات اٹھائے جائینگے انہوں نے مزید کہا ہے کہ عوامی نیشنل پارٹی موجودہ بجٹ کو عوامی بجٹ نہیں کہہ سکتی کیونکہ چھوٹوں صوبوں کو وفاقی بجٹ میں نظرانداز کیا گیا ہے ہم سمجھتے ہیں کہ یہ بجٹ صرف پنجاب میں عام انتخابات میں نشستیں جیتنے کے لئے بنایا گیا ہے۔

متعلقہ عنوان :