الیکشن کمیشن نے کرم ایجنسی میں قومی اسمبلی کی نشست بڑھا دی

فاٹا میں قومی اسمبلی کی مجموعی نشتیں 12 ہو گئیں

ہفتہ اپریل 20:28

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 28 اپریل2018ء) وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقے ((فاٹا)) کی کرم ایجنسی میں قومی اسمبلی کی ایک نشست سے بڑھا کر 2 نشتیں کر دی گئیں۔کرم ایجنسی کی حلقہ بندی سے متعلق اعتراضات اٹھائے جانے کے بعد الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) نے اپنا فیصلہ سنایا۔ای سی پی کے عہدیدار نے بتایا کہ فاٹا میں قومی اسمبلی کی مجموعی نشتیں 12 ہو چکی ہیں تاہم الیکشن کمیشن کے فیصلے کی رو سے نشست فاٹا کے اندر سے ہی بنائی جائے۔

حکام کے مطابق ای سی پی ہفتے تک حلقہ بندیوں سے متعلق تمام اعتراضات کو خارج کر دے گا جس کے بعد قومی اور صوبائی اسمبلی کی نئی حلقہ بندیوں کا حتمی نوٹیفکیشن جاری کرے گا۔اس حوالے سے ای سی پی کے عہدیدار نے مزید بتایا کہ ووٹر کی اندراج، تصیح اور منتقلی کے حوالے سے درخواستیں جمع کرانے میں محض 4 دن باقی ہیں۔

(جاری ہے)

واضح رہے کہ ملک بھر میں قائم 14 ہزار ڈسپلے سینٹرز قائم کیے گئے ہیں جہاں ضلعی الیکشن کمشنر افسران ہفتہ اور اتوار کو عوامی سہولیت کے لیے اپنے فرائض انجام دیں گے۔

ان ڈسپلے سینٹرز میں ووٹرز کی رجسٹریشن، نام کی درستی یا اخراج کیا جائے گا، اس حوالے سے پنجاب میں 7 ہزار 928 ، سندھ میں 2 ہزار 585، خیبرپختونخوا میں 2 ہزاز 545 جبکہ خیبرپختونخوا میں ایک ہزار 429 سینٹرز قائم کیے گئے۔۔الیکشن کمیشن کی جانب سے 8300 پر ایس ایم ایس سروس کو بھی اپ ڈیٹ کیا گیا اور ووٹرز اپنے قومی شناختی کارڈ کا نمبر بھیج کر ووٹ کی رجسٹریشن کی تفصیلات معلوم کرسکتے ہیں۔

اس حوالے سے چیف الیکشن کمشنر جسٹس (ر) سردار محمد رضا کا کہنا تھا کہ قومی مستقبل سازی کے لیے نوجوان مرد و خواتین کا ووٹ کا اندراج اور جمہوری عمل میں شرکت کرنا بہت ضروری ہے اور عام انتخابات 2018 سے قبل تمام پاکستانیوں کے لیے موقع ہے کہ وہ اپنے ووٹ کا اندراج یقینی بنائیں۔حکام نے بتایا کہ ووٹ کے اندراج یا تصیح کرانے والے امیدوار اپنے ہمراہ شناختی کارڈ کی کاپی اور درخواست فارم ساتھ ضروری لائیں تاہم اورساتھ اپنا شناختی کارڈ بھی لائیں۔ای سی پی کے مطابق ووٹر کا اندراج اس کے شناختی کارڈ پر درج مستقل یا عارضی ایڈریس کے مطابق شامل کیا جائیگا۔