کینیڈا بھی چربہ سازی کی امریکی ترجیحی واچ لسٹ میں شامل

کینیڈا نے پیٹنٹ اور ٹریڈمارک پروڈکٹس کو تحفظ فراہم کرنے کے لیے اقدامات نہیں کیے،امریکی تجارتی نمائندہ

ہفتہ اپریل 20:28

واشنگٹن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 28 اپریل2018ء) امریکا نے چین اور بھارت کے ساتھ اپنے اہم تجارتی شراکت دار کینیڈا کوبھی چربہ سازی میں سرفہرست قراردے دیا۔حقوق ملکیت دانش کی خلاف ورزی کرنے والے ملکوں کی سالانہ رپورٹ میں امریکی تجارتی نمائندے نے کینیڈا کو ترجیجی واچ لسٹ میں شامل کرلیا ہے جس کی وجہ سے اب اسے مزید سخت جانچ پڑتال سے گزرنا ہوگا، چین اور بھارت گزشتہ 14 سال سے اس لسٹ میں شامل ہیں۔

یوایس ٹی آر کا کہنا ہے کہ مذکورہ ملکوں میں سے کسی نے بھی پیٹنٹ اور ٹریڈمارک پروڈکٹس کو تحفظ فراہم کرنے کے لیے مناسب اقدامات نہیں کیے۔امریکی تجارتی نمائندے رابرٹ لائٹہیزر نے اپنے بیان میں کہاکہ امریکی انٹرپرینیورز کے آئیڈیاز اور تخلیق اقتصادی ترقی کو فروغ دیتے ہیں اور لاکھوں محنتی امریکیوں کو ملازمتوں پر رکھتے ہیں۔

(جاری ہے)

اس رپورٹ سے ہماری تجارتی شراکت داروں کو واضح پیغام دیاگیا ہے کہ امریکی حقوق ملکیت دانش کا تحفظ ٹرمپ انتظامیہ کی ترجیح ہے۔

پرائیرٹی واچ لسٹ میں 12 ملک شامل ہیں جبکہ اس سے کم اہمیت کی واچ لسٹ میں 24 ملک شامل ہیں، کولمبیا، ارجنٹائن اور چلی کے ساتھ ترجیحی اور میکسیکو کو واچ لسٹ میں شامل کیاگیا ہے۔یوایس ٹی آر کے مطابق آئی پی کے حوالے سے حساس امریکی صنعتیں مجموعی طور پر 45.5 ملین امریکیوں کو ملازمتیں فراہم کرتی ہیں اور جی ڈی پی کا 30 فیصد ہونے کے ساتھ امریکی برآمدات میں 50 فیصد سے زیادہ حصے کی حامل ہیں۔