مینٹل ہسپتال کی ڈاکٹر نے چیف جسٹس آف پاکستان کی گاڑی روک لی، لاپتہ بیٹے کی بازیابی کی درخواست

جسٹس ثاقب نثار کا ہسپتال میں زیر علاج بھارتی خاتون کی موجودگی کا نوٹس ، بھارتی سفارتخانے سے رابطہ کر کے واپس بھجوانے کی ہدایت

ہفتہ اپریل 22:42

مینٹل ہسپتال کی ڈاکٹر نے چیف جسٹس آف پاکستان کی گاڑی روک لی، لاپتہ ..
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 28 اپریل2018ء) مینٹل ہسپتال کے دورے کے دوران چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار کی گاڑی ایک خاتون ڈاکٹر نے روک لی اور اپنے لاپتہ بیٹے کو بازیاب کرانے کی درخواست کی۔ تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے لاہور میں پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف مینٹل ہسپتال کا دورہ کیا۔ اس موقع پر مینٹل ہسپتال کی ڈاکٹر عائشہ نے چیف جسٹس کی گاڑی روک لی اور اپنے لاپتہ بیٹے کو بازیاب کرانے کی درخواست کی۔

ڈاکٹر عائشہ نے کہا کہ میرا بیٹا تین سال سے لاپتہ ہے، میرا ایک ہی بیٹا ہے آپ اسے بازیاب کروائیں۔ چیف جسٹس کو لاپتہ بیٹے کی بازیابی کی درخواست دیتے ہوئے ڈاکٹر رو پڑی۔ چیف جسٹس نے خاتون ڈاکٹر کو مدد کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ آپ درخواست دیں میں آپ کے ساتھ ہوں، انشااللہ اللہ مدد کرے گا، ہمیں دو دن دیں آپ کا کیس دیکھ لیتے ہیں۔

(جاری ہے)

چیف جسٹس نے اپنے عملے کو ڈاکٹرعائشہ سے ان کے بیٹے کا تمام ریکارڈ لینے کی ہدایت کی۔

چیف جسٹس نے مینٹل ہسپتال میں زیر علاج بھارتی خاتون کی موجودگی کا بھی نوٹس لے لیا۔ ڈاکٹرز نے بتایا کہ بھارتی خاتون اجمیرہ کئی سال سے میںٹل اسپتال میں زیر علاج ہے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ یہ خاتون یہاں کیا کر رہی ہے بھارتی سفارتخانے سے رابطہ کر کے اسے واپس بھجوائیں۔