ساہیوال‘ ڈسٹر کٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال کے چلڈرن وارڈ میں نوزائیدہ بچے کو دا خل نہ کر نے پر ہنگامہ آرائی ورثاء کا احتجاج

اتوار اپریل 15:00

ساہیوال(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 29 اپریل2018ء) ڈسٹر کٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال کے چلڈرن وارڈ میں نوزائیدہ بچے کو دا خل نہ کر نے پر ہنگامہ آرائی ورثاء کا احتجاج ۔چیف ایگزیکٹو نے ڈاکٹروں کے رویہ کا نوٹس لے لیا ۔

(جاری ہے)

تفصیلات کے مطابق عارف والہ کے محنت کش عامر جا وید کی بیوی عدیہ نے ڈسٹر کٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال کے گائنی وارڈ میں ایک بچے کو جنم دیا بچے کو ڈاکٹروں نے فوری طور پر چلڈرن وارڈ میں آکسیجن لگوانے کی ہدایت کی لیکن چلڈرن وارڈ کے ڈاکٹروں نے بچے کو وارڈ میں دا خل کر نے سے انکار کر دیا اور بچے کو فوری واپس لے جانے کے لئے کہا جس پر بچے کے ورثاء نے ہنگامہ کھڑا کر دیا اور ڈاکٹروں کے رویہ پرا حتجاج کیا ۔

اسی دوران ہسپتال کے سٹاف نے وارڈ میں بچے کو چار گھنٹے کی ہنگامہ آرائی کے بعد آکسیجن لگا دی جس سے بچہ بچ گیا ہسپتال کے چیف ایگزیکٹو نے اس واقعہ کا نو ٹس لے کر ورثاء کی شکایت پر تین ڈاکٹروں ملائکہ، مریم، ڈاکٹر اظہر کے خلاف انکوائری کا حکم دے دیا اور میڈیکل سپر ٹنڈنٹ کو انکوائر ی کے بعد رپورٹ پیش کر نے کا حکم دیا ہے ۔ورثاء نے ڈاکٹروں کو معطل کر نے کا مطالبہ کیا ہے۔

متعلقہ عنوان :