کپاس کے کاشتکاروں کورواں ماہ کے دوران اگیتی ، پچھیتی و درمیانی کاشت کیلئے پو دوں کے درمیا ن منا سب فا صلہ اور کھا دیں ڈالنے کی ہدایت

اتوار اپریل 15:00

فیصل آباد۔29 اپریل(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 29 اپریل2018ء) کپاس کی بی ٹی اقسام کے کاشتکاروں کورواں ماہ اپریل کے دوران درمیانی کاشت کے دوران پودے سے پودے کافاصلہ 9سی12انچ اور مئی میں پچھیتی کاشت کے دوران فاصلہ 6سے 9انچ رکھنے کی ہدایت کی گئی ہے اورکہاگیاہے کہ کاشتکار اس دوران کھیلیوں سے کھیلیو ں کا فاصلہ اڑھائی فٹ تک رکھیں تاکہ فی ایکڑ پودوں کی تعداد مناسب رہ سکے۔

ماہرین زراعت نے کہاکہ کاشتکار اگیتی و درمیانی کاشت کیلئے کھیتوں میں 161 کلوگرام نائٹروجن ، 50کلوگرام فاسفورس اور 50کلوگرام پوٹاش فی ایکڑ ڈالیں تاہم پچھیتی کاشت کے دوران یہ مقدار 80کلوگرام نائٹروجن ، 55 کلو گرام فاسفورس اور 38کلوگرام پوٹاش فی ایکڑ رکھنی چاہیے۔ انہوںنے بتایاکہ فاسفورس اور پوٹاش کی تمام مقدار بوائی کے وقت استعمال کرنا ضروری ہے تاہم اگر فاسفورسی کھادوں میں 200کلوگرام فی ایکڑ گوبر کی کھاد بھی ملا لی جائے تو اس سے بہت اچھی پیداوار حاصل کی جاسکتی ہے۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہاکہ کاشتکار اگیتی و درمیانی کاشت کیلئے چھٹا حصہ نائٹروجن بوائی کے وقت ، چھٹا حصہ بوائی کے ایک ماہ بعد اور باقی حصہ ایک پانی چھوڑ کر اگلے پانی پر ڈالناچاہیے۔ انہوںنے کہاکہ اگر یکم مئی سے لے کر 15مئی کے درمیان کپاس کی بی ٹی اقسام کاشت کی جائیں تو اس صورت میں چوتھا حصہ نائٹروجن بوائی کے وقت ، چوتھا حصہ بوائی کے ایک ماہ بعد ، چوتھا حصہ ڈوڈیاں بننے پر اور بقیہ ایک چوتھائی حصہ ٹینڈے بننے پر استعمال کرناچاہیے۔

متعلقہ عنوان :