ڈیرہ اللہ یار ،قیامت خیز گرمی میں پینے کے پانی بحران اوربجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کے خلاف شہریوںکا احتجاجی مظاہرہ و دھرنا

سندھ بلوچستان قومی شاہراہ کو ٹریفک کے لئے بند کردیا گیا ، انتظامیہ کی یقین دہانی پر چار گھنٹے کے بعد ٹریفک بحال ہوئی

اتوار اپریل 19:21

ڈیرہ اللہ یار (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 29 اپریل2018ء) ڈیرہ اللہ یار میںقیامت خیز گرمی میں پینے کے پانی بحران اوربجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کے خلاف شہریوںکا احتجاجی مظاہرہ، مظاہرین نے دھر نا دیکر سندھ بلوچستان قومی شاہراہ کو ٹریفک کے لئے بند کردیا، جس سے دونوں اطراف سے ٹریفک معطل ہوگئی، انتظامیہ کی یقین دہانی پر چار گھنٹے کے بعد ٹریفک بحال ہوئی ڈیرہ اللہ یار میں گز شتہ چند ہفتوں سے پینے کے پانی کا شدید بحران پیدا ہو گیا ہے شہر کے مختلف علاقوں میں گز شتہ کئی ہفتوں سے پینے کے پانی کی سپلا ئی بند ہو گئی ہے جس سے شہر یو ں کی مشکلات میں بے پناہ اضافہ ہو گیا ہے گر می کی شد ت کے ساتھ ہی بجلی کا بھی بد تر ین بحران پیدا ہوگیا روز انہ بارہ سے چو دہ گھنٹوں کی بجلی کی لوڈ شیڈنگ روز کا معمول بند چکا ہے بلآخر سیکڑوں شہریوں نے زیادتیوں کے خلاف شہر سڑکوں نکل آئے۔

(جاری ہے)

تفصیلات کے مطابق جما عت اسلامی کے زیر اہتمام ہونے والا احتجاجی مظاہرہ مر کزی دفتر سے بر آمد ہوا جو شہر کے مختلف راستوں سے ہوتا ہو ا ،مرکزی چوک پرپہنچا جہاں پرمظاہرین نے قومی شاہراہ پر دھر نا دیا جس سے دونوں اطراف سے ٹریفک معطل ہوگئی ، مظاہرے جماعت اسلامی کے مولانا ایوب منصور ، عبدالمجید بادینی ،اے ڈی شیخ ،کامران صدیقی ، سردار رفیق احمد بھٹی، ڈاکٹر عبدالحفیظ کھوسہ ،عبدالخالق کھوسہ ، امیش کمار ،عبدالرسول بلوچ نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ شدید گر می شروع ہو تے ہی شہریوں کے لئے بے پناہ مشکلات پید اکر دی گئی ہے جہاں نا پانی ہے اور نا ہی بجلی۔۔

۔۔ انسانی زندگی کا زندہ رہنا مشکل کردیا گیا ہے مظاہرین نے کہاکہ اگر فور ی طورپر بجلی اور پانی کا انتظام درست نہ ہوا تو سینکڑوں مظاہرین پی ایچ ای اور واپڈا کے دفتر کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کریں گئے مظاہرین نے کہاکہ پانی اور بجلی نا ہونے سے معصوم بچوں کی تعلیم بھی سخت متاثرہوئی ہے جہاں بجلی نا ہونے سے ان کی رات بھر نیند پوری نہیں ہوتی جس سے بچے صبح کے وقت بغیر غسل کے اپنے تعلیمی اداروں کو جارہے ہیں جس میں اکثر بچوں نے اسکول جانا ہی چھوڑ دیا ہے انہوں نے حکام سے مطالبہ کیا کہ ہنگامی بنیادوں پر شہریوں کے ان دو بڑے مسائل پر خصوصی توجہ دے کر انہیں حل کیا جائے مظاہرین نے کہاکہ رمضان شریف کی آمد ہے ابھی سے مہنگائی نے بھی سر اٹھانا شروع کر دیا ہے ضلعی انتظامیہ منافہ خوروں کا گھیرا تنگ کرکے رمضان شریف میں لوگوں پر ریلیف فراہم کیا جائے ۔

مظاہرین نے انتظامیہ کی یقین دہانی پر چار گھنٹوں کے بعد قومی شاہراہ کو ٹریفک کے لئے بحال کردیا