اسلام آباد ٹریفک پولیس کا سیف سٹی پراجیکٹ میں ٹریفک کی ما نیٹرنگ کیلئے الگ شعبہ قائم

کیمروں کے ذریعے ٹریفک کی نگرانی کی جائے گی، چالان بذریعہ ٹریفک پولیس اہلکار گاڑی مالکان کے گھروں میں پہنچایا جائے گا چالان جمع نہ ہونے کی صورت میں گاڑی ٹرانسفر نہ ہو سکے گی

اتوار اپریل 19:40

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 29 اپریل2018ء) اسلام آباد ٹریفک پولیس نے سیف سٹی پراجیکٹ میں ٹریفک کی مانیٹرنگ کیلئے الگ شعبہ قائم کر دیا جہاں کیمروں کے ذریعے وفاقی دارلحکومت میں ٹریفک کی نگرانی کی جائے گی جبکہ چالان بذریعہ ٹریفک پولیس اہلکار گاڑی مالکان کے گھروں میں پہنچایا جائے گا،چالان جمع نہ ہونے کی صورت میں گاڑی ٹرانسفر نہ ہو سکے گی ۔

(جاری ہے)

تفصیلات کے مطابق آئی جی پی اسلام آباد ڈاکٹر سلطان اعظم تیموری کے خصوصی احکامات کے مطابق ٹریفک قوانین پر سختی سے عملد رآمد اور حادثات کی روک تھام کے لئے اسلام آباد ٹریفک پولیس نے اہم فیصلہ کر لیاہے جس کے مطابق قانون توڑنے والے افراد کا بچنا ناممکن ہو گا ،اسلام آباد کی شاہراہوں پر نصب سیف سٹی کیمروں کے ذریعے نگرانی کا آغاز کر دیا گیا اور ٹریفک قوانین پر عمل نہ کرنے کی صورت میں چالان جدید نظام کے ذریعے قانون شکن کے پتے پر بھجوائے جائیں گے،سیف سٹی پراجیکٹ میں ٹریفک مانیٹرنگ کے لئے ایک الگ شعبہ بھی قائم کر دیا گیا ہے ،اسلام آباد ٹریفک پولیس کایہ قدم جو کہ بین الاقوامی معیار کے مطابق ہے دنیا کے ترقی یافتہ ممالک میں اس ٹیکنالوجی سے مدد حاصل کی جا تی ہے اسلام آباد کو حادثات سے پاک بنانے،اسلام آباد کی شاہراہوں پر ہونے والی ٹریفک قوانین کی خلاف ورزیوں کو روکنے اور ٹریفک کا بہائو رواں دواں رکھنے میں یہ قدم اہم ثابت ہو گا،ایس ایس پی ٹریفک فرخ رشید اس سسٹم کی نگرانی از خود کریں گے اس نظام کے بارے میں اسلام آباد ٹریفک پولیس کے تمام افسران و جوانوں کو مکمل آگا ہی فراہم کر دی گئی ہے جو اس پر مکمل عمل در آمد کرائیں گے، ایس ایس پی ٹریفک فرخ رشید نے کہا ہے کہ چالان بذریعہ ٹریفک پولیس اہلکار گاڑی مالکان کے گھروں میں پہنچایا جائے گا،چالان جمع نہ ہونے کی صورت میں گاڑی ٹرانسفر نہ ہو سکے گی، جبکہ ٹریفک چالان کی رقم جمع نہ کرانے کی صورت میں گاڑی کے سالانہ ٹیکس کے ساتھ وصول کی جائے گی،گاڑیوں کے فروخت کنندگان اپنی گاڑی کو خرید کنندہ کے نام پر ٹرانسفر کروالیں ۔

۔۔۔۔