ایم ایم اے کاقومی ورکرز کنونشن، مینار پاکستان جلسہ عوامی قوت کا بھرپورمظاہرہ ہوگا‘ پیر اعجاز ہاشمی

یم ایم اے موثر دینی سیاسی قوتوں کا اتحاد ہے،فرقہ وارانہ سوچ نہیں رکھتیں، اتحاد امت کی داعی ہیں‘ گفتگو

اتوار اپریل 20:00

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 29 اپریل2018ء) جمعیت علما پاکستان کے مرکزی صدر اور متحدہ مجلس عمل کے نائب صدر پیر اعجاز احمد ہاشمی نے کہا ہے کہ 2 مئی کو ایم ایم اے کاقومی ورکرز کنونشن اور 13مئی کو مینار پاکستان پر جلسہ نظام مصطفی کے نفاذ کی طرف اہم پیشرفت اور عوامی قوت کا بھر پورمظاہرہ ہوگا۔ پانچوں جماعتوں کے ضلعی اور صوبائی عہدیدار قومی ورکرز کنونشن میں بھر پور شرکت کریں گے، تاکہ آئندہ کے لائحہ عمل کے لئے مشاورت کی جاسکے اور قائدین لائحہ عمل کا اعلان کریں ۔

مختلف وفود سے ملاقات میں انہوںنے کہاکہ ایم ایم اے ملک کی موثر دینی سیاسی قوتوں کا اتحاد ہے ۔ جن کی جڑیں عوام میں ہیں اور جو وسیع تر اسلامی سوچ رکھتی اور نظام مصطفی پر متحد ہیں۔ان میں سے کوئی جماعت بھی فرقہ وارانہ سوچ نہیں رکھتی، سب اتحاد امت کی داعی ہیں۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہاکہ متحدہ مجلس عمل قرآن اور نظام مصطفی کے قیام کے لئے جدوجہد کرے گی۔

جمہوری انداز سے آئین اور قانون کے مطابق جدوجہد ہر شہری کا حق ہے۔ ایم ایم اے اسلامی اقدارکے تحفظ اور نظام مصطفی کے نفاذ کے لئے عوام سے رابطہ کرنے کیلئے پرعزم ہے۔جس کے لئے اسلام آباد میں27 اپریل کو ہونے والے سربراہی اجلاس میں اعلان کردیا گیا ہے۔ ہماری جدوجہد ہمیشہ پرامن اور اسلامی تعلیمات کے مطابق رہی ہے۔ اس وقت ضرورت اس امر کی ہے کہ دینی قوتوں کے ووٹ بینک کو یکجا کیا جائے۔

جس کے لئے اکابرین کی ماضی میں کی جانے والی کوششوں کو ہی آگے بڑھایا جارہا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ جے یو پی متحدہ مجلس عمل کے پلیٹ فارم سے مشترکہ سیاسی جدوجہد کو جاری رکھے گی۔ پیر اعجا ز ہاشمی نے کہا کہ 2۔ مئی کے کنونشن میں قائدین ایم ایم اے کے سیاسی لائحہ عمل کے خدوخال پیش کریں گے۔ جس میں منشور اور آئندہ کے جلسے بھی شامل ہیں۔ ہمارے جلسے اتحاد بین المسلمین کا عملی اظہار ہوں گے۔