ایڈز کے انسداد، کنٹرول بارے آگہی کو فروغ اور امتیاز کا خاتمہ کیا جائے ،وانگ شیوائو منگ

امیتاز کے شکار ایڈز میں مبتلا معصوم بچوں کی حالت زار انتہائی قابل رحم ہے ،چینی میڈیا کو انٹرویو ہر ایک کو خوشحال اور بھرپور زندگی گزارنے کا مساوی حق حاصل ہے ، خاتون اول پانامہ

اتوار اپریل 20:10

بیجنگ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 29 اپریل2018ء) سال 2030تک ایڈز کے وبائی مرض کے پھیلائو کے قلع قلع کے مقصد کے حصول کیلئے اس وقت کا انتہائی اہم معاملہ یہ ہے کہ ایڈز کے انسداد اور کنٹرول بارے آگہی کو فروغ دیا جائے اور امتیاز کا خاتمہ کیا جائے ان خیالات کا اظہار چین کے لیے اقوام متحدہ کے ایڈز کے خیر سگالی سیفر وانگ شیوائومنگ نے چینی میڈیا کو ایک انٹر ویو میں کیا اس سے قبل انہوں نے ایڈز کے وبائی مرض کے خاتمے اور ہرا یک کی بہتر صحت کو یقینی بنانے کے لیے زرہ بر امیتاز نہ برتنے کے حصول کی ضرورت کے بارے میں پیکنگ یونیورسٹی میں طلباء کے ساتھ ایک مبواحثے میں شرکت کی،وانگ جو کہ ایک فلمی اداکار ہیں اور ان کی چین بھر میں مہشوری ہے اس بات کی وضاحت کی کہ وہ کس وجہ سے اقوام متحدہ کے ایڈز کے خیر سلگالی سفیر بنے اور قطی امتیاز نہ برتنے کی سرگرمیوں میں ملوث ہوئے انہوں نے کہا کہ میں نے ایسے بچوں کو دیکھا ہے جن سے ایڈز کی وجہ سے امتیاز برتا جا رہا ہے ان کی مظلومیت نے مجھے بے حد متاثر کیا اور میں نے اس بارے میں غور فکر کرنا شروع کیا کہ میں ان کی کس طرح مدد کر سکتا ہوں انہوں نے اعتراف کیا کہ لفظ ایڈز کسی وقت اس کے لیے’’خطرناک‘‘ تھا تاہم سائنسی اور طبی علم کو بہتر طور پر سمجھنے کی بدولت مجھے علم ہوا ہے کہ یہ اتنا خطرنا ک نہیں ہے،انہیں ایڈز کے شکار معصوم بچوں کی حالت زار کے بارے میں خاص طور پر ہمددردی ہے انہوں نے کہا کہ ہمیں چاہیے کہ ہم ان کی زیادہ دیکھ بھال کریں اور بچوں کے اس گروپ سے قطی امتیاز نہ برتنے میں مدد کی جائے انہوں تعلیمی اور مختلف خدمات پر رسائی کے حصول کے لیے عام آدمی کی طرح حقوق حاصل ہونے چاہیے،گذشتہ روز کی تقریب میں پانامہ کی خاتون اول اور لاطینی امریکہ کے لیے اقوام متحدہ کی ایڈز کی خصوصی سفیر لورینا کاسٹیلو ڈی ویرلا بھی موجود تھی اس تقریب کے دوران دونوں سفیروں نے ایڈز سے متعلق موضوعات کے بارے میں طلباء کے ساتھ تفصیلی تبادلہ خیالات کیا اور صحت مندانہ دنیا کے قائم اور امتیاز کے خلاف جنگ کے لیے ان کی کوششوں سے تبادلہ کیا۔

(جاری ہے)

مسسز لوریناکاسٹیلوڈی ویرلا نے وانگ سے اس بارے میں اتفاق کیا انہوں نے اس بات پر زور دیا ہرا یک کو بنیادی میڈیکل سروسز،،تعلیم اور انفارمیشن کا حق حاصل ہے تاکہ وہ خوشحال اور بھرپور زندگی بسر کر سکیں،تقریب میں تبادلہ کی جانے والی معلومات کے مطابق چین نے نشے کی لت،،ایڈز سے متعلق اموات اور ایچ آئی وی انفیکشن میں کمی کرنے سمیت ایڈز کے انسداد اور کنٹرول کے شعبے میں نمایاں پیش رفت کی ہے ۔