حیدرآباد میں سندھ کونسل ، جنرل ورکرز اجلاس میں جعلی لسٹوں پر انتخاب کروایا گیا،ناراض کارکنان مسلم لیگ ن

غیر جمہوری طریقے سے شاہ محمد شاہ کو سندھ کا صدر جبکہ سلیم ضیاء کو جنرل سیکریٹری بنایا گیا،یہ طریقہ غیر جمہوری ہونے کے ساتھ ساتھ غیر آئینی ہے،مخدوم عطاء حسین ، راجہ عبدالحق، رانا خالد، سید فواد شاہ اور دیگر کی پریس کانفرنس

اتوار اپریل 20:30

حیدرآباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 29 اپریل2018ء) مسلم لیگ(ن) کے ناراض کارکنان مخدوم عطاء حسین ، راجہ عبدالحق، رانا خالد، سید فواد شاہ اور دیگر نے حیدرآباد پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہاکہ حیدرآباد میں سندھ کونسل ، جنرل ورکرز اجلاس میں جعلی لسٹوں پر انتخاب کروایا گیا اور غیر جمہوری طریقے سے شاہ محمد شاہ کو سندھ کا صدر جبکہ سلیم ضیاء کو جنرل سیکریٹری بنایا گیا ، ہم سمجھتے ہیںکہ یہ طریقہ غیر جمہوری ہونے کے ساتھ ساتھ غیر آئینی بھی ہے ۔

انہوں نے کہاکہ پارٹی آئین کے مطابق 8 سال کا عرصہ گزارنے کے بعد کوئی بھی کارکن ضلع کا صدر یا جنرل سیکریٹری بن سکتا ہے ۔ لیکن شاہ محمد شاہ ایک درجن پارٹیاں بدلنے کے بعد چند سال پہلے مسلم لیگ(ن) میں آئے اور انہیں سندھ کا صدر بنادیا گیا ہے ۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہاکہ نواز شریف نے تو ووٹ کو عزت دو کا نعرہ لگایا مگر ہم انہیں یہ کہتے ہیں کہ کارکن کو یا ووٹرز کو عزت دو ۔

شاہ محمد شاہ کے پارٹی میں آنے کے بعد اسماعیل راہو، حکیم بلوچ، امداد چانڈیو، عرفان اللہ مروت اور دیگر پارٹی چھوڑ چکے ہیں ۔ سابق صدر بابو سرفراز جتوئی کو ایک سازش کے تحت ہٹاکر پارٹی گورنر ہاؤس سے چلائی جارہی ہے ۔ ہم نظریاتی کارکن ہیں ، ہم پارٹی میںجمہوریت چاہتے ہیں اس لئے اپنے ساتھ یا کسی بھی کارکن کے ساتھ زیادتی برداشت نہیں کریں گے۔