خان صاحب کی ساری تقریر کا متن صرف ’’میں‘‘تھا، یعنی ’’میں‘‘ہوں تو سب کچھ ممکن ہے، ’’میں‘‘ نہیں تو کچھ بھی نہیں‘شہباز شریف

پیر اپریل 13:04

خان صاحب کی ساری تقریر کا متن صرف ’’میں‘‘تھا، یعنی ’’میں‘‘ہوں ..
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 30 اپریل2018ء) وزیراعلی پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ خان صاحب کی ساری تقریر کا متن صرف ’’میں‘‘تھا، یعنی ’’میں‘‘ہوں تو سب کچھ ممکن ہے، ’’میں‘‘ نہیں تو کچھ بھی نہیں،جو شخص پچھلے 22 سال سے تقریر نہیں بدل سکا ایسے شخص سے ہمارے ملک کا ایک طبقہ تقدیر بدلنے کی امید لگائے بیٹھا ہے۔اپنے ایک بیان میں شہباز شریف نے عمران خان کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ جب 5 سال ایک صوبے میں حکومت کرنے کے بعد بھی آپ شوکت خانم، نمل یونیورسٹی اور کرکٹ ورلڈ کپ کے پیچھے چھپ جائیں تو سمجھ لیں کہ شکست آپ کا مقدر ہے۔

جو شخص پچھلے 22 سال سے تقریر نہیں بدل سکا ایسے شخص سے ہمارے ملک کا ایک طبقہ تقدیر بدلنے کی امید لگائے بیٹھا ہے۔۔شہباز شریف نے کہا کہ جسے اپنے آپ سے ہٹ کر کوئی دوسرا نظر نہیں آتا، وہ ایک پاکستان کیسے بنا سکتا ہی ۔

(جاری ہے)

ساتھ ہی انہوں نے عمران خان کی صوبائی حکومت کی کارکردگی پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ خیبرپختونخوا میں احتساب کا نظام کیوں بند رکھا، وہاں گرلز تعلیمی ایمرجنسی کیوں نافذ نہ کی، ایک نصاب تعلیم کیوں نہیں دیا، نئے ہسپتال اور تعلیمی اداریکیوں نہیں بنائے، خیبرپختونخوامیں زرعی ایمرجنسی کیوں نافذ نہ کی، ریکارڈ قرضیکیوں لیے، ہائیڈرو بجلی گھر کیوں قائم نہ کیی ۔

وزیراعلی پنجاب نے تنقید کرتے ہوئے کہا کہ کے پی حکومت کچھ کارکردگی تو پیش کر دیتی۔شوگر مافیا میں شوگر کنگ جہانگیر ترین شامل ہے۔وزیراعلی پنجاب نے مسلم لیگ (ن) کی حکومت کی کارکردگی پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ ہماری سیاست ملک و قوم کی خدمت اور ترقی ہے اور رکاوٹوں کے باوجود ہم نے تعمیر و ترقی کے منصوبوں کو آگے بڑھایا ہے، لیکن قوم کو اندھیروں سے دوچار کرنے والوں کو ترقی کے سفر سے تکلیف ہو رہی ہے۔

شہباز شریف نے کہا کہ مخالفین نے پاکستان کی منزل کو کھوٹا کرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی، عوام کی خدمت خالی نعروں سینہیں ہوتی، شکست خوردہ عناصر کی ہر سازش ناکام ہوئی۔ساتھ ہی ان کا کہنا تھا کہ میرا جینا مرنا اپنے عوام کے ساتھ ہے، جب تک جان میں جان ہے، عوام کی بیلوث خدمت کرتا رہوں گا، مٹھی بھر عناصر مخالفت کرتے رہیں، خدمت کا سفر جاری رکھیں گے۔

علاوہ ازیں پنجاب حکومت کے ترجمان ملک احمد خان نے کہا کہ عمران خان نے 11 نکات میں کوئی خاص بات نہیں کی بلکہ آئین میں سے چند چیزیں اٹھا کر 11 نکات بنا کر پیش کیے۔بات تو جب تھی کہ عمران خان خیبرپختونخوا میں اپنی حکومت کی 5 سالہ کارکردگی بتاتے۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے پنجاب میں کئی نئے ہسپتال قائم کیے، عمران خان کی تنقید فضول ہے۔