پاکستان کی 70 سالہ تاریخ کو بدلنے کا وقت آگیا ہے، پاکستان اور اس کے عوام کی تقدیر بدلنے کے لئے ہم گلی گلی، گھر گھر جائیں گے،

ماہ رمضان میں بھی عوامی رابطہ مہم جاری رکھیں گے، ’’ووٹ کو عزت دو‘‘ کا نعرہ گھر گھر پہنچ چکا ہے اور ا س کو عملی جامہ پہنانے کا وقت آگیا ہے سابق وزیراعظم محمد نواز شریف کا ملتان اور بہاولپور ڈویژن سے تعلق رکھنے والے پارٹی رہنماؤں سے خطاب

پیر اپریل 17:30

پاکستان کی 70 سالہ تاریخ کو بدلنے کا وقت آگیا ہے، پاکستان اور اس کے ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 30 اپریل2018ء) سابق وزیراعظم محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ پاکستان کی 70 سالہ تاریخ کو بدلنے کا وقت آگیا ہے، پاکستان اور اس کے عوام کی تقدیر بدلنے کے لئے ہم گلی گلی، گھر گھر جائیں گے، ماہ رمضان میں بھی عوامی رابطہ مہم جاری رکھیں گے، ’’ووٹ کو عزت دو‘‘ کا نعرہ گھر گھر پہنچ چکا ہے اور ا س کو عملی جامہ پہنانے کا وقت آگیا ہے۔

انہوں نے ان خیالات کااظہار پیر کو یہاں ملتان اور بہاولپور ڈویژن سے تعلق رکھنے والے پارٹی رہنماؤں سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ سابق وزیراعظم محمد نواز شریف نے کہاکہ ہم صرف پاکستان کی کامیابی کیلئے کام کر رہے ہیں، ہم ملک و قوم کی خدمت عبادت سمجھ کر کررہے ہیں، دعا ہے کہ ہم سب کامیابی سے اپنی منزل کو پہنچیں۔

(جاری ہے)

نواز شریف نے کہاکہ 2013ء کے حالات اور آج کے حالات میں فرق سب کے سامنے ہے۔

انہوں نے کہاکہ 2013ء میں پاکستان کو انتہائی مشکل حالات کا سامنا تھا، ہم نے صورتحال کا جرأت سے سامنا کیا اور پاکستان کے استحکام اور مسائل کے حل کا سفر کامیابی سے طے کیا ہے۔ نواز شریف نے کہا کہ جب ہم نے اقتدار سنبھالا تو ملک میں امن وامن کی ابتر صورتحال درپیش تھی، آئے روز دہشت گردی کی کارروائیاں ہورہی تھیں اور دہشتگردی کو ملک سے ختم کرنا کوئی آسان کام نہیں تھا۔

ملک میں دہشتگردی کا راج تھا، سکول بند تھے، شہری خوف وہراس کی حالت میں تھے۔ انہوں نے کہاکہ اسلام آباد سمیت ملک کا کوئی حصہ دہشتگردی سے محفوظ نہیں تھا۔ پاکستان میں ہر جگہ لوگ دہشت گردی سے گھبرائے ہوئے تھے حتیٰ کہ ہمارے سکول کے بچوں کو بھی نشانہ بنایا گیا تھا۔ ہم نے اپنا ذہن بنایا کہ بہت ہو چکا اس لعنت کامقابلہ کریں گے۔ دہشت گردی اور لاقانونیت کو ختم کریں گے۔

سب جماعتوں، میڈیا اور عوام سمیت تمام فریقین کو ساتھ لے کر چلے اور دہشت گردی کے خاتمے کاعزم کیا اور عملی اقدامات اٹھائے۔ محمد نواز شریف نے استفسار کیا کہ دہشت گردی کو ختم کرنے کیلئے مشرف اور زرداری نے کیوں نہیں ہاتھ ڈالا۔ ان لوگوں نے ڈر کی وجہ سے دہشتگردی کو ختم کرنے کے اقدامات نہیں کیے کیونکہ دہشت گردی کے خاتمے کے لئے ہمت اور بہادری کی ضرورت ہوتی ہے۔

سابق وزیر ا عظم نے کہاکہ 2013ء میں کراچی میں امن وامان کی صورتحال سب کے سامنے تھی،،کراچی میں امن و امان کی صورتحال نہایت ابتر تھی۔ انہوں نے کہاکہ پیپلز پارٹی سندھ میں عرصہ دراز سے حکومت میں ہے اس نے تو کچھ نہیں کیا تھاکراچی کے عوام بھتہ خوری، راہزنی، ٹارگٹ کلنگ سے پریشان تھے۔ انہوںنے اقتدار میں آنے کے چند ماہ بعد کراچی کا دورہ کیا اور عزم کیا تھا کہ کراچی کی رونقیں بحال کریںگے۔

انہوں نے کہاکہ دہشتگردی کیخلاف آپریشن سے پہلے تمام سٹیک ہولڈرز کو اعتماد میں لیا، آج کراچی والے ہماری خدمت دیکھ کر تعریف کرتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ہمارے عزم اور اقدامات سے کراچی میں امن بحال ہوا۔ نوازشریف نے حالیہ سینیٹ انتخابات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ووٹوں کی خرید وفروخت ہوئی ہے بلوچستان میں جو کچھ ہوا کسی نے اس پرنوٹس لیا انہوں نے سوال کیا کہ کیا ملک ایسے چلے گا ، کیاآپ اس طرح کی پارلیمنٹ بنانا چاہتے ہیں۔

کیا اس لئے پاکستان بنا ہے کہ ایک دن اس طرح کے لوگوں کو پارلیمنٹ کے اندر لے کے آئیں جو بکے ہوئے ہوں، جو خرید ے ہوئے ہوں۔سابق وزیراعظم نے کہاکہ یہ سلسلہ کب تک چلے گااور کیوں چلے گا، میراضمیر اس بات کو قبول نہیںکرتا اور میں اپنے ضمیر کے خلاف نہیں جا سکتا۔ میں اٹھ کھڑاہوںگا مقابلہ کروں گا، میں ایسے ہتھکنڈوں سے پیچھے نہیں ہٹوں گا، عوام ہمارے ساتھ ہیں۔

میں حالات سے ڈرنے والا نہیں، میں پاکستان کا سوچتا ہو ں، ملک کا سوچتا ہوں۔ انہوں نے کہاکہ بلوچستان میں جو کچھ ہوا وہ بھی عوام کے سامنے ہے، میں ایسے اوچھے ہتھکنڈوں کے سامنے جھکا ہوں نہ جھکوں گا۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان کے عوام اور عوامی نمائندے میرے ساتھ ہیں، ’’ووٹ کو عزت دو‘‘ کے نعرے کو پذیرائی مل رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان کی70سالہ تاریخ کو بدلنے کا وقت آ گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ آنیوالی70سال ماضی کی70برسوں کی طرح نہیں ہونے چاہیئں۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان اور عوام کی تقدیر بدلنے کیلئے ہم گلی گلی جائیں گے، میری کوئی قربانی اگر ملک اور عوام کے کام آئے تو مجھے خوشی ہوگی۔ انہوں نے کہاکہ سینیٹ انتخابات میں عمران خان نے جو کچھ کیا سب کے سامنے ہے۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان قوم سے کتنا جھوٹ بولیں گے،کتنا دھوکہ دیں گے، نیا پاکستان بنانے والے بتا ئیں کیا وہ منافقت سے نیا پاکستان بنائیں گے، نیا پاکستان کسی کو گالیاں دینے، کسی کی پگڑی اچھالنے سے نہیں بنتا۔

انہوں نے کہاکہ عمران خان نی5سال میں خیبر پختونخواکے عوام کی کیا خدمت کی سابق وزیراعظم نے کہاکہ نیا پاکستان حق، سچ اور عوامی خدمت سے بنتا ہے جبکہ عمران خان جھوٹ بولنے کے عادی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سندھ میں حکومت کرنیوالوں نے عوام کیلئے کیا کیا، حالات یہ ہیں کہ سندھ میں عوام بھوک اور بیماری سے مر رہے ہیں، مخالفین کچھ بھی کر لیں عوام مسلم لیگ ن کے ساتھ ملکر نعرہ لگا رہے ہیں۔

محمد نواز شریف نے کہاکہ مشرف نے پاکستا ن کے آئین کو توڑ اور اندھیروں میں ڈبویا، کیا ملک کے اندھیرے دور کرنے کا کام صرف ن لیگ نے کرنا ہے۔ انہوں نے کہاکہ ترقی، زرعی انقلاب، ہسپتال، تعلیمی ادارے بنانے کا کام کیا صرف ہمارا تھا نیلم جہلم توانائی منصوبہ دس سال سے مکمل نہیں ہو رہا تھا، ہم نے مکمل کیا۔ انہوں نے کہا کہ کچھی کینال منصوبہ صرف کتابوں میں ملتا تھا، ہم نے مکمل کیا، بلوچستان کے کسانوں کی تقدیر بدل گئی ہے۔

سابق وزیراعظم محمد نواز شریف نے کہا کہ بلوچستان کے کسانوں کو یہ مسلم لیگ (ن) کا تحفہ ہے۔ انہوں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ ہم نے مخالفین کے ہتھکنڈوں کو کامیاب نہیں ہونے دینا۔ وزیراعلیٰ پنجاب اگر توانائی منصوبے تیزی سے مکمل نہ کراتے تو ابھی تک اندھیروں میں ہوتے، سالہا سال سے بند نندی پور منصوبے کو ہم نے مکمل کیا۔ محمد نواز شریف نے کہا کہ ماضی میں نندی پور منصوبے پر سارے پیسہ بنا رہے تھے۔

انہوں نے کہاکہ پاکستان کو ایٹمی طاقت بنانے کا ہمیں صلہ دیا جا رہا ہے، امریکی صدر نے ایٹمی دھماکے نہ کرنے پر5 ارب ڈالر کی پیشکش کی تھی، اگر میں خود غرض یا لالچی ہوتا تو پیسے لے لیتا اور دھماکے نہ کرتا۔ میں نے کہا کہ ہمیں آپ کی مدد یا خیرات نہیں چاہیئے۔ انہوں نے کہاکہ بھارت کے ایٹمی دھماکوں کے جواب میں ہم خاموش نہیں بیٹھ سکتے تھے ، ہم نے دنیا کو بتا کر ایٹمی دھماکے کیے۔

سابق وزیراعظم محمد نواز شریف نے کہاکہ ہم پاکستان کے مفاد کو سودا کبھی نہیں کر سکتے تھے۔ سابق وزیر اعظم نے کہاکہ ماہ رمضان میں بھی عوامی رابطہ مہم جاری رکھیں گے۔ ووٹ کو عزت دو کا نعرہ گھر گھر پہنچ چکا ہے اسکو عملی جامہ پہنانے کا وقت آ گیاہے۔ ماہ رمضان کے بعد انتخابی مہم بھر پور طریقے سے شروع کریں گے۔اس موقع پر مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے کہا کہ ہمارے مخلص کارکن پارٹی کے لئے چٹان کی طرح کھڑے ہیں، ہم مشکل حالات میں ساتھ کھڑے رہنے والے ساتھیوں کو سلام پیش کرتے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ پارٹی رہنمائوں اور کارکنوں کی محنت رنگ لائے گی اور کامیابی مقدر بنے گی۔ شہباز شریف نے کہاکہ ایٹمی دھماکے نہ کرنے پر آمادہ کرنے کے لئے نواز شریف کو دھمکیاں تک دی گئیں اورانہیں ایٹمی دھماکے نہ کرنے کے لئے مختلف لالچ بھی دیئے گئے لیکن نواز شریف ڈٹے رہے اور پاکستان کو ایٹمی طاقت بنانے کی جرات دکھائی۔ شہباز شریف نے کہاکہ پاک چین لازوال دوستی کا سہرا بھی نوازشریف کے سر جاتا ہے، ملک سے اندھیرے دور کرنے کے لئے توانائی کے تمام منصوبے نواز شریف کے وژن کے عکاس ہیں، ہم نے اچھے ورکرز کے طور پر کام کرتے ہوئے توانائی بحران ختم کیا۔

انہوں نے کہاکہ عمران خان کے جلسوں میں عوام کی تعداد دن بدن کم ہوتی جا رہی ہے۔ عمران خان پانچ سال کہاں تھے، خیبرپختونخوا میں کیا کیا انہوں نے دھرنے اور احتجاجی سیاست کر کے ملک و قوم کا وقت برباد کیا۔ شہباز شریف نے کہاکہ کراچی کے عوام نے شہر میں امن قائم کرنے پر نواز کا شکریہ ادا کیا۔ کراچی کے عوام نے کہا کہ ہم نواز شریف کا احسان نہیں چکا سکتے۔

انہوں نے کہاکہ (ن) لیگ کی سیاست قوم کی خدمت اور ملکی ترقی کی سیاست ہے۔ رکاوٹوں کے باوجود ترقیاتی منصوبوں کو معیار اور رفتار کے ساتھ آگے بڑھایا۔ انہوں نے کہاکہ قوم کو مشکلات سے دوچار کرنے والوں کو عوام کی خوشحالی سے تکلیف ہے، ملکی ترقی کے مخالفین نے خوشحالی کی جانب بڑھتے قدم روکنے کی سازشیں کیں۔ انہوں نے کہاکہ عوام دشمنوں نے پاکستان کی منزل کو کھوٹا کرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی۔ شہباز شریف نے اس عزم کا اظہار کیاکہ جب تک جان میں جان عوام کی بے لوث خدمت کرتا رہوں گا اور مسلم لیگ (ن) عوامی خدمات کا سفر پوری رفتار سے جاری رکھے گی ۔