ڈائو یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز میں انسدادِ بدعنوانی واک

پیر اپریل 23:00

کراچی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 30 اپریل2018ء) ڈائو یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کی پرو وائس چانسلر پروفیسر زرناز واحد نے کہا ہے کہ کرپشن کے کینسر کے علاج کے لئے انفرادی اور اجتماعی سطح پر اقدامات کرنے ہوں گے، تعلیمی اداروں میں کرپشن کے خلاف شعور پیدا کرنے سے پاکستان کو سنبھالنے والی آئندہ نسل میں کرپشن کے ناسور کے خلاف بیزاری پیدا ہو گی۔

پیر کو جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق ان خیالات کا اظہار انہوں نے یونیورسٹی کے اوجھا کیمپس میں کرپشن کے خلاف او پی ڈی سے ڈپارٹمنٹ آف فارمیسی تک انسدادِ کرپشن واک کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ اس موقع پر ڈائو یونیورسٹی کے پرو وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد مسرور، پروفیسر زیبا حق، پروفیسر سنبل شمیم، پروفیسر نواز لاشاری، پروفیسر فوزیہ امتیاز سمیت دیگر سینئر فیکلٹی میمبرزاور طلبہ کی بڑی تعداد شرکت کی۔

(جاری ہے)

پروفیسر ڈاکٹر زرناز واحد نے کہا کہ اعلی تعلیمی کمیشن (ایچ ای سی) نے قومی احتساب بیورو کے اشتراک سے ملک کے تعلیمی اداروں میں کرپشن کے خلاف مہم شروع کی ہے، ڈائو یونیورسٹی نے ایچ ای سی کی ہدایت پر سال بھر کے لئے انسدادِ بدعنوانی مہم کا پروگرام مرتب کیا ہے۔ انہوں نے واک کے شرکاء سے اپیل کی کہ ہر سطح پر کرپشن کو روکنے کی کوشش کریں۔ واک کے شرکاء نے کرپشن کے خلاف بینرز اور پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے۔

متعلقہ عنوان :