طاقت کا استعمال کرکے قبضہ تو کیا جاسکتا ہے لیکن دلوں میں نہیں اترا جاسکتا، ڈاکٹر فاروق ستار

لیاقت آباد میں پیپلز پارٹی نے کل کا جلسہ ہمارے وسائل سے کیا اورمہاجروں کے زخموں پر نمک پاشی کی ہے بلاول بھٹو کو شہدائے اردو کے ورثا سے معافی مانگنی چاہیے، لیاقت آباد میں شہدائے اردو کی قبروں پر فاتحہ خوانی کے بعد میڈیا سے گفتگو

پیر اپریل 23:51

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 30 اپریل2018ء) ایم کیو ایم پاکستان پی آئی بی گروپ کے سربراہ ڈاکٹر فاروق ستار نے کہا ہے کہ طاقت کا استعمال کرکے قبضہ تو کیا جاسکتا ہے لیکن دلوں میں نہیں اترا جاسکتا۔لیاقت آباد میں پیپلز پارٹی نے کل کا جلسہ ہمارے وسائل سے کیا اورمہاجروں کے زخموں پر نمک پاشی کی ہے۔۔بلاول بھٹو کو شہدائے اردو کے ورثا سے معافی مانگنی چاہیے ۔

وہ پیر کی شام راکین رابطہ کمیٹی کے ہمراہ لیاقت آباد میں شہدائے اردو کی قبروں پر فاتحہ خوانی کے بعد میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے ۔۔ڈاکٹر فاروق ستار نے کہا کہ پیپلزپارٹی کی پہلی حکومت سے ظلم و ستم جاری ہے ۔کل لیاقت آباد کے ٹنکی گرانڈ میں پیپلزپارٹی نے جلسے میں جو کچھ کہاوہ آپ کے علم میں ہے اور آج ہم نے پیپلزپارٹی کے ظلم و ستم کا پردہ چاک کرنے کے لئے آج شہدااردو کی قبور پر حاضری دی ہے۔

(جاری ہے)

اس ظلم وستم کا بلاول بھٹو کا آئینہ دکھانا ضروری ہے۔پیپلزپارٹی سانحہ پکا قلعہ پر بھی معافی مانگے ۔ انھوں نے کہا کہ کراچی اور حیدرآباد کے لوگوں سے بھاری ٹیکس لینے کے باوجود سوتیلا سلوک کیا جاتا ہے۔تعلیمی اداروں میں اردو بولنے والوں کے ساتھ زیادتی کی جارہی ہے،طاقت کا استعمال کرکے قبضہ تو کیا جاسکتا ہے لیکن دلوں میں نہیں اترا جاسکتا۔

انھوں نے کہا کہ کوٹہ سسٹم پر آج بھی عملدرآمد ہورہا ہے،کوٹہ سسٹم کے ذریعے ہماری جائز نوکریاں لے لی گئیں ،ہمیں ترقیاتی فنڈ کا دس فیصد بھی نہیں ملا،حلقہ بندیوں اور سینیٹ میں ہمیں محروم رکھا گیا۔۔ڈاکٹر فاروق ستار نے کہا کہ ذوالفقار بھٹو کے پہلے دورِ حکومت میںاردو کو رابطہ اور انتظام کی زبان کے طور پر ختم کیا جارہا تھا ،اردو زبان کے خلاف ہونے والی زیادتیوں پرجولائی 1972 میں پورے سندھ بھر میں احتجاج ہوا،سرکاری سرپرستی میں فسادات کرائے گئے جس میں شہادتیں ہوئیں،پھر رئیس امروہوی کو یہ کہنا پڑا کہ اردو کا جنازہ ہے ذرا دھوم سے نکلے۔