ہائی ٹینشن ٹرانسمیشن لائنز ٹرپ ہوگئیں،

لوڈشیڈنگ میں غیر معمولی حد تک اضافے کا خدشہ نئے نیلم جہلم پلانٹس ٹیسٹنگ پر ہیں،220 کے وی کی این ٹی ڈی سی لائنز بحال کر دی گئی ہیں،ترجمان توانائی ڈویژ ن

منگل مئی 15:25

ہائی ٹینشن ٹرانسمیشن لائنز ٹرپ ہوگئیں،
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 مئی2018ء) نیشنل ٹرانسمیشن اینڈ ڈسپیچ کمپنی لمیٹڈ (این ٹی ڈی سی) کی ہائی ٹینشن ٹرانسمیشن لائنز ٹرپ ہونے سے 4چشمہ پاور پلانٹس بند ہوگئے۔این ٹی ڈی سی کی ہائی ٹینشن ٹرانسمیشن لائنز ٹرمپ ہونے سے چار چشمہ پاور پلانٹس بند ہوگئے،جس کے نتیجے میں 1200 میگاواٹ بجلی سسٹم سے نکل گئی۔اس کے علاوہ 3600 میگاواٹ کے تین آر ایل این جی پلانٹس بھی ٹیسٹنگ کیوجہ سے بند ہیں۔

اس ساری صورتحال کے باعث عارضی طور پر ملک میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ میں اضافے کا امکان ہے۔

(جاری ہے)

گزشتہ روز اس حوالے سے ترجمان توانائی ڈویڑن کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا کہ صوبوں سے کم طلب کیوجہ سے پن بجلی کی پیداوار میں کمی ہے اور نئے نیلم جہلم پلانٹس بھی ٹیسٹنگ پر ہیں۔فوری طور پر 220 کے وی کی این ٹی ڈی سی لائنز بحال کر دی گئی ہیں،تاہم چشمہ نیوکلیئر پلانٹس سے بجلی کی بحالی میں کچھ وقت درکار ہے۔چشمہ 1 اور چشمہ 2 کی بحالی کا امکان ہے،تاہم چشمہ 3 اور چشمہ 4 سے بجلی بحالی میں زیادہ وقت لگ سکتا ہے۔ سسٹم کی حفاظت کیلئے تمام بجلی تقسیم کار کمپنیوں میں عارضی طور پر لوڈ مینجمنٹ شروع کردی گئی ہے۔