یواے ای پاکستان سے تجارتی تعلقات بڑھانے کا خواہاں ہے، پاکستانی مصنوعات معیاری ہیں، تجارتی حجم بڑھانے کیلئے مل کر کوششیں کرنا ہونگی، حماد عبیدابراہیم

پاکستان اور یو اے ای کو مل کر ترقی کی منزل طے کرنے کی ضرورت ہے، پاک فوج کی قربانیوں کی وجہ سے دہشت گردی دم توڑ چکی ہے اور امن بحال ہو چکا ہے ، غضنفربلور

منگل مئی 16:00

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 مئی2018ء) متحدہ عرب امارات کے سفیر حماد عبید ابراہیم سالم الزابی نے کہا ہے کہ انکا ملک پاکستان سے تجارتی تعاون بڑھانے کا خواہاں ہے۔دونوں ممالک کے مابین بھائی چارے کا دیرینہ رشتہ ہے۔ پاکستانی مصنوعات معیاری ہیں مگر انھیں یو اے ای کی منڈی میں وہ مقام حاصل نہیں جو ہونا چائیے جسکے لئے مارکیٹنگ کو بہتر بنانے کے ساتھ دونوں ممالک کی کاروباری برادری اور دیگر شراکت داروں کومل کر کوشش کرنا ہو گی۔

یو اے ای کے سفیر حماد عبید ابراہیم سالم نے یہ بات فیڈریشن آف پا کستا ن چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈ سٹر ی کے صدرغضنفر بلورسے بات چیت کرتے ہوئے کہی۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان سے تجارتی تعلقات بڑھانا انکا مشن ہے۔ پاکستان کو میڈیا کی جانب سے بے نبیاد پراپیگنڈا کا سامنا ہے جس کا توڑ کرنے کی ضرورت ہے۔

(جاری ہے)

انھوں نے پاکستانی کمپنیوں کو دنئی میں منعقد ہونے والے ایکسپو 2020 میں بھرپور شرکت کی دعوت دیتے ہوئے کہا کہ 1083 ایکڑ پر ہونے والے اس ایکسپو میں 170 ممالک کی ہزاروں کمپنیاں شرکت کر رہی ہیں جس دوران دنیا کے سب سے بڑے شمسی توانائی کے منصوبے کی تکمیل بھی ہو جائے گی۔

اس موقع پر غضنفر بلور نے کہا کہ پاکستان اور یو اے ای کو مل کر ترقی کی منزل طے کرنے کی ضرورت ہے۔ پاک فوج کی قربانیوں کی وجہ سے دہشت گردی دم توڑ چکی ہے اور امن بحال ہو چکا ہے اس لئے غیر ملکی سرمایہ کار بلا خوف و خطر پاکستان کا رخ کر سکتے ہیں۔ ہم دبئی ایکسپو میں بھرپور شرکت کریں گے اور وہاں کے حکمرانوں سے بھی مل کر کاروبار ی تعلقات مزید مستحکم کرنے کی کوشش کریں گے۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان میں توانائی، آئی اینڈ گیس، ٹیلی کام، فنانشل سروسزاور دیگر شعبوں میں سرمایہ کاری کے روشن امکانات موجود ہیں اس لئے یو اے ای کے سرمایہ کار بھی پاکستان کا رخ کریں۔