مزدور کی تنخواہ کم ازکم ایک تولہ سونے کے برابر کی جائے ،پاکستان عوامی تحریک

آئین کی دفعہ 38کے تحت قائم سماجی تحفظ کے ادارے اپنی ذمہ دارایاں پوری نہیں کر رہے،پاکستان عوامی تحریک لیبر ونگ کے جلسے سے سہیل رضا اور دیگرکا خطاب

منگل مئی 16:00

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 مئی2018ء) پاکستان عوامی تحریک کراچی سندھ لیبر ونگ کے صدر سہیل رضا ،عوامی فرنٹ پی آئی اے کے رہنماء بشیر خان مروت،عوامی فرنٹ پاکستان ریلوے کے رہنماء ارشد ایوب ،عوامی فرنٹ اسٹیل ملز کے قائدین نے پاکستان عوامی تحریک لیبر ونگ کے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ یوم مئی ان مزدوروں کے نام ہے جو افلاس و غربت میں دربدر پھر رہے ہیں ۔

جو مزدور دوسروں کے گھر تعمیر کرتے ہیں انکے اپنا کوئی ٹھکانہ نہیں ہوتا ۔مزدور کے استحصال سب سے زیادہ نام نہاد جمہوری حکومتیں کرتیں ہیں ۔حکومتیں مزدوروں کو انکا حق دیتی ہیں نہ جاگیردوروں اور سرمایہ داروں کے مظالم سے نجات دلاتی ہیں صنعت کار مزدوروں کا استحصال کرتے ہیں مگر لیبر کو سستا معیاری جلد قانونی تحفظ میسر نہیں ہے ۔

(جاری ہے)

نجکاری کے ارٹیکلز جن میں محنت کشوں کے حقوق کی ضمانت دی گئی ہے حکومتیں انکی خلاف ورزی کرتیں ہیں ۔

کرپٹ نظام میں صنعت کار امیر سے امیر تر اور مزدور غریب سے غریب تر ہوتا جا رہا ہے ۔آئین کی دفعہ 38کے تحت قائم سماجی تحفظ کے ادارے اپنی ذمہ دارایاں پوری نہیں کر رہے۔خوشحالی صرف یوم مئی منانے سے نہیں بلکہ مزدوروں کو انکا حق دینے سے آئے گی۔ان قائدین نے مطالبہ کیا مزدور کی تنخواہ کم ازکم ایک تولہ سونے کے برابر کی جائے۔مزدوروں کا استحصال اور بچوں سے مزدوری بندکی جائے یکساں اجرت کے قوانین پر عمل درآمد کرایا جائے۔

ملک سے سرمایہ دارانہ نظام ،ودیروں کا ستحصالی تسلط کا خاتمہ کیا جائے۔ملک بھر کے مزدور طبقے کو بجلی ،گیس ،اور میڈیکل ،اشیائے صرف میں خصوصی رعایت کا قانون بنایا جائے ۔بچوں سے مزدوری ،محنت مشقت بند کرائی جائے اور اس قانون پر سختی سے عمل درآمد کرایا جائے ۔ان قائدین نے کہا پاکستان عوامی تحریک کو اقتدار ملا تو مزدور کو منافع میں شریک کا قانون بنائے گی اور تمام ضروریات زندگی کی اشیاء پچاس فیصد ڈسکائونٹ پر لیبر کیلئے مہیا کرائے گی ۔مزدوروں کیلئے خصوصی پیکج کا کاردڑ جاری کیا جائے گا ۔ان قائدین نے مزید کہا اسلام واحد مذہب ہے جو محنت کشوں کو سراہتے ہوئے انکو عزت کی نگاہ سے دیکھتا ہے مگر افسوس ہمارے ملک میں مزدور سے اس کے جینے کا حق چھین لیا گیا ہے۔