لوڈشیڈنگ ختم نہ کرنے پر شہباز شریف کا نام لوڈشیڈنگ رکھا جائے،سیدخورشید شاہ

منگل مئی 16:36

لوڈشیڈنگ ختم نہ کرنے پر شہباز شریف کا نام لوڈشیڈنگ رکھا جائے،سیدخورشید ..
سکھر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 مئی2018ء) قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید احمدشاہ نے کہاہے کہ شہباز شریف نے لوڈ شیڈنگ ختم نہ ہونے پر نام بدلنے کا اعلان کیا تھا اب ان کا نام ہی لوڈ شیڈنگ رکھا جائے،نگران وزیراعظم کے لیے ابھی کوئی مشاورت نہیں ہوئی،سیاست میں ایسے لوگ شامل ہوگئے ہیں جن کو اس کا پتہ نہیں ہے،جن کے پاس پروگرام اور نظریہ نہیں وہ گالم گلوچ کی سیاست کرتے ہیں، نواز شریف نے زیادتی اور منافقت کی سیاست کی، جس کی وجہ سے اب وہ اکیلے ہیں اور اسے وہ اب مان بھی رہے ہیں۔

منگل کوسکھر میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے خورشید شاہ نے ایم کیو ایم پاکستان کی جانب سے پیپلز پارٹی پر تنقید کے جواب میں کہا کہ الزام لگانا اور بات کرنا آسان ہوتا ہے، ایم کیو ایم سے پوچھا جائے کہ وہ گزشتہ 33 سال کے دوران نواز شریف،، پرویز مشرف اور پیپلز پارٹی کے ساتھ رہے، اس دوران انہوں نے کیا کیا ہے، ایم کیو ایم نے صرف ٹارگٹ کلنگ کی،ایک یونیورسٹی بھی نہ بناسکی، پیپلز پارٹی نے مختصر عرصہ میں 7 یونیورسٹیز بنائیں جن میں سے 3 سکھر میں ہیں۔

(جاری ہے)

بجلی کی لوڈ شیڈنگ کے حوالے سے اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ لوڈشیڈنگ کہیں اور نہیں صرف رائیونڈ میں ختم ہوئی ہے۔ شہباز شریف نے لوڈ شیڈنگ ختم نہ ہونے پر نام بدلنے کا اعلان کیا تھا اب ان کا نام ہی لوڈ شیڈنگ رکھا جائے۔پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے پر حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے انہوں نے کہاکہ حکومت نے یکم مئی کو پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھا کر مزدوروں کا مذاق اڑایا ہے، پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے سے مہنگائی کا نیا طوفان کھڑا ہوگا، حکومت اپنی کمزوریوں اور ناکام گورننس کا بدلہ عوام سے نہ لے، پٹرولیم مصنوعات میں قیمتوں میں اضافے کو فوری طور پر واپس لے اور محصولات کے دائرہ کار کو بڑھانے اور وصولی میں اضافے کے لیے اقدامات کرے۔

نگران وزیراعظم کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں سید خورشیدشاہ نے کہاکہ نگران وزیراعظم کا نام فی الحال نہیں بتائوں گا، نگران وزیراعظم پر 100فیصد اتفاق ہوگا ۔