پاکستان میں پہلے سوفیصد انتخابات نہ ہونے کے امکانات تھے ،اب ففٹی ففٹی ہوگئے ہیں‘ عبوری سیٹ اپ آتے ہی بہت بڑے پیمانے پر اصلاحات ہوں گی جن کا آغاز چیف جسٹس پاکستان نے کیا ہے ‘

آزادکشمیر حکومت اپنے اندرونی مسائل میں بُری طرح پھنس چکی ہے جسے اب اور کچھ کرنے کی فرصت نہیں ہے مسلم کانفرنس کے صدر وسابق وزیراعظم سردار عتیق احمد خان کی تقریب میں میڈیا سے بات چیت

منگل مئی 18:20

مظفرآباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 مئی2018ء) آل جموںوکشمیر مسلم کانفرنس کے صدر وسابق وزیراعظم سردار عتیق احمد خان نے کہا ہے کہ پاکستان میں پہلے سوفیصد انتخابات نہ ہونے کے امکانات تھے ،اب ففٹی ففٹی ہوگئے ہیں عبوری سیٹ اپ آتے ہی بہت بڑے پیمانے پر اصلاحات ہوں گی جن کا آغاز چیف جسٹس پاکستان نے کیا ہے آزادکشمیر حکومت اپنے اندرونی مسائل میں بُری طرح پھنس چکی ہے ،جسے اب اور کچھ کرنے کی فرصت نہیں ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوںنے نوجوان جرنلسٹ ثاقب عباسی کی دعوت ولیمہ میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر ثمر عباس ،طاہر احمدفاروقی ،جاوید چوہدری ،نصیر اعوان ،نعیم عباسی ،سمیت میڈیا کے دوست احباب نے کثیر تعداد میں شرکت کی اور ثاقب عباسی کو نئی زندگی کی شروعات پر مبارکباد پیش کی۔

(جاری ہے)

سردار عتیق احمد خان نے کہا کہ ملک وقوم کی پالیسیاں مستقبل کو پیش نظر رکھتے بنائی جاتی ہیں ہر کام کا وقت ہوتا ہے اور اپنے وقت پر کام نہ کیے جائیں تو آگے چل کر بہت بڑے مسائل پیدا ہوسکتے ہیں جن کو سنبھالنا مشکل ہو سکتا ہے ،،پاکستان میں بڑھتی آبادی اور مسائل کے حل کے بہت امکانات ہیں چاروں صوبوں میں بہت زیادہ رقبہ خالی پڑے ہیں جہاں بکھیری آبادیوں کو سمیٹ کر کم وسائل میں ذیادہ سہولیتں مہیا کی جاسکتی ہیں آزادکشمیر میں آبادی کے حوالے سے صورتحال مختلف ہے رقبوں کا مسئلہ ہے یہاں دیہی علاقوں میں جہاں جہاں لوگ آباد ہیں وہاں ہی سہولیات دی جائیں تو بڑی حدتک شہروں پر آبادی کا دبائو روکا جاسکتا ہے ۔