شب برات، جشن ولادت امام مہدی علیہ السلام مذہبی جوش و خروش سے منایا گیا

اعمال نیمہ شعبان میںتلاوت کلام مجید ،دعائے کمیل،نوافل اور قضا نمازوں کی ادائیگی کی گئی

منگل مئی 21:18

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 مئی2018ء) ملک بھر میں شب برات اور جشن ولادت بارہویں تاجدار امامت حضرت امام مہدی علیہ السلام مذہبی جوش و خروش اورعقیدت و احترام سے منایا گیا۔ اس حوالے سے مساجد، مدارس اور امام بارگاہوں میں شب برات اور جشن ولادت باسعادت کی تقریبات کا اہتمام کیا گیا۔گھروں اور عبادت گاہوں میں چراغا ں کیا گیا۔ علماکرام ، ذاکرین اور شعرا نے بارگاہ امام زمانہؑ میں نذرانہ عقیدت پیش کیا۔

جامعتہ المنتظر ماڈل ٹاون میں اعمال نیمہ شعبان ادا کئے گئے۔تلاوت کلام مجید ،دعائے کمیل،نوافل اور قضا نمازوں کی ادائیگی کی گئی۔ جبکہ زیارت امام حسین علیہ السلام اور دعاء امام زمانہ ؑکی تلاوت کرکے پیغمبر اکرم کے آخری جانشین سے اپنی عقیدت و محبت کا اظہار کرنے کے ساتھ روزے رکھے گئے ۔

(جاری ہے)

علما نے اپنے خطابات میں کہا کہ شب برات ہمیں اپنے خدا کا قرب اختیار کرنے اور گناہوں کی بخشش کی توفیق دیتا ہے۔

شب برات دراصل اپنا احتساب ہے کہ ہم نے پورے سال میںکیا کچھ کیااور آئندہ کا لائحہ عمل کیاہوگا۔ یہ وہ توفیق ہے جس سے انسان کو فائدہ اٹھانا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ اسلام دین فطرت ہے، جو قیامت تک قائم رہے گا۔ حضر ت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہٰ وسلم مبعوث فرما کر اللہ تعالیٰ نے نبوت کا دروازہ بند کردیا اور ان کے شریعت کی تشریح اور فروغ کے لئے بارہ آئمہ معصومین کو جانشین بنایا جو حضرت علی علیہ السلام سے شروع ہوئی اورامام مہدی علیہ السلام پر اختتام پذیر ہوگی۔

ان کا کہنا تھا کہ ہر زمانے میں حجت خدا کی موجودگی رہی ہے۔ یہ دنیا انتظار میں ہے کہ امام مہدیؑ ظہور کریں گے۔اور دنیا میں عدل و انصاف نافذ کریں گے۔ علما نے کہا کہ 15۔ شعبان المعظم بارہویں امام حضرت مہدی علیہ السلام سامرہ عراق میں 255ھجری میں حضرت امام حسن عسکری علیہ السلام کے ہاں پیدا ہوئے اور حکم خداوند ی سے غیبت میں گئے اور اللہ رب العزت کی مشیت کے مطابق ظہور کریں گے۔ حضرت عیسیٰ علیہ السلام ان کی تصدیق کے لئے دنیا میں دوبارہ آئیں گے۔

متعلقہ عنوان :