پاراچنار مرغی لے جانے والی گاڑیوں کو چیک پوسٹوں پر روکنے کی وجہ سے ہزاروں مرغیاں ہلاک ہوگئیں،مرغی فروش یونین

مرغی فروشوں نے گورنر،کورکمانڈر پشاور اور دیگر اعلی حکام سے مرغی فروشوں کے ساتھ ہونے والی زیادتیوں کا فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے

منگل مئی 21:29

پاراچنار(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 مئی2018ء) پاراچنار مرغی لے جانے والی گاڑیوں کو چیک پوسٹوں پر روکنے کی وجہ سے ہزاروں مرغیاں ہلاک ہوگئیں۔

(جاری ہے)

مرغی فروشوں نے گورنر،،کورکمانڈر پشاور اور دیگر اعلی حکام سے مرغی فروشوں کے ساتھ ہونے والی زیادتیوں کا فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے مرغی فروش یونین کے راہنماؤں سید مجاہد حسین، سید کامل حسین اور سید عابد حسین نے میڈیا کو بتایا کہ چیک پوسٹوں پر ان کی مرغیوں سے بھری گاڑیاں روکھی جاتی ہیں جسے ہزاروں مرغیاں ہلاک ہو رہی ہیں اور انہیں ناقابل تلافی نقصان ہو رہا ہے رہنماؤں نے بتایا کہ گزشتہ شام ٹل کے تور غر چیک پوسٹ پر شام آٹھ بجے مرغیوں کی گاڑیاں بارہ گھنٹے تک روکھی گئی جبکہ دوسرے گاڑیوں کی آمد و رفت جاری تھی،جسے گاڑیوں میں موجود دو ہزار سے زائد مرغیاں ہلاک ہوگئیں۔

راہنماؤں نے بتایا کہ چھپری،علیزئی،آڑاولی اور صدہ میں محصول ٹیکس دینے کے باوجود مرغیوں کے گاڑیوں سے ایک ہزار سے دو ہزار روپے لیے جاتے ہیں۔جبکہ دیگر چیک پوسٹوں پر بھی پولیس اور لیویز اہلکار مرغیوں کی گاڑیوں کو پیسے دئیے بغیر نہیں چھوڑتے۔مرغی فروشوں نے کورکمانڈر پشاور،،،گورنر خیبرپختونخوا اور دیگر اعلی حکام سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے