حیدرآباد، صائمہ جروار کے قاتلوں کی عدم گرفتاری اور بلوچستان میں ہزارہ برادری کے لوگوں کے قتل کیخلاف سماجی تنظیموں کا احتجاجی مظاہرہ

منگل مئی 21:39

حیدرآباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 مئی2018ء) صائمہ جروار کے قاتلوں کی عدم گرفتاری اور بلوچستان میں ہزارہ برادری کے لوگوں کے قتل کیخلاف مختلف سماجی تنظیموں کی جانب سے پریس کلب حیدرآباد کے سامنے احتجاجی مظاہرے کئے گئے۔ ڈیموکریٹک فرنٹ اور وومن ایکشن فورم اور ہیومن رائٹس یونیورسل نیشنل آف پاکستان کی جانب سے کئے جانے والے مظاہروں سے خطاب کرتے ہوئے امر سندھو، ڈاکٹر اشو تھاما، نصرت چنہ، ڈاکٹر سید کلیم شاہ، شیخ محمد یوسف اور دیگر نے خطاب کرتے ہوئے چیف جسٹس آف پاکستان سے مطالبہ کیا کہ معصوم صائمہ جروار کے قاتلوں کو سخت سے سخت سزا دے کر نشان عبرت بنایا جائے کیونکہ ایسے درندہ صف لوگ معاشرے کیلئے ناسور اور بدنما داغ ہیں جو ہوا کی بیٹی کو اپنی درندگی کا نشانہ بناکر قتل کرتے ہیں ایسے درندہ صف انسانوں کی وجہ سے لوگ اپنے بچوں کو اسکول اور مدرسے بھیجنے سے ڈرتے ہیں۔

(جاری ہے)

نہ جانے کب کوئی حادثہ رونما ہوجائے۔ معصوم بچے اور بچیاں گھروں میں محصور ہوکر رہ گئی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان میں معصوم بچے اور بچیوں کے تحفظ کیلئے ایسا جامعہ قانون بنایا جائے کہ کوئی بھی درندہ صف انسان ان کو میلی نظر سے نہ دیکھے اور اپنی درندگی کا نشانہ نہ بناسکے۔ انہوں نے کہاکہ ہم پاکستان کو مشترکہ قومی ریاست سمجھتے ہیں جہاں ہر قوم اور نسل کے لوگوں کو جینے کا برابر حق ہے ۔ انہوں نے کہاکہ بلوچستان میں ہزارہ برادری کے لوگوں کا قتل عام بند کیا جائے۔