متحدہ مجلس عمل کے مقابلے میں دینی جماعتوں کا دوسرا اتحاد بھی سامنے آگیا

دینی اور سیاسی جماعتوں کے سربراہوں کا اگلے عام انتخابات میں مشترکہ طور ایک ہی نام اور جھنڈے تلے انتخابات میں حصہ لینے کا فیصلہ مشترکہ نام ،جھنڈے اورمنشور کیلئے قائم کمیٹی اگلے 7روز میں حتمی فیصلہ دے گی دیگر سیاسی اور ہم خیال مذہبی جماعتوں سے رابطوں کیلئے بھی کمیٹی قائم

منگل مئی 21:43

متحدہ مجلس عمل کے مقابلے میں دینی جماعتوں کا دوسرا اتحاد بھی سامنے ..
اسلا م آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 مئی2018ء) متحدہ مجلس عمل کے مقابلے میں دینی جماعتوں کا دوسرا اتحاد بھی سامنے آگیا ہے ،9دینی اور سیاسی جماعتوں کے سربراہوں نے اگلے عام انتخابات میں مشترکہ طور ایک ہی نام اور جھنڈے تلے انتخابات میں حصہ لینے کا فیصلہ کر لیا ہے ،مشترکہ نام ،جھنڈے اورمنشور کیلئے قائم کمیٹی اگلے 7روز میں حتمی فیصلہ دے گی ،دیگر سیاسی اور ہم خیال مذہبی جماعتوں سے رابطوں کیلئے بھی کمیٹی قائم کر دی گئی ۔

جمعیت علماء اسلام کے امیر مولانا سمیع الحق کی دعوت پر سیاسی اور ذیلی جماعتوں کا مشاورتی اجلاس اسلام آباد میں مولانا سمیع الحق کی صدارت میں منعقد ہوا اجلاس میں جمعیت علمائ اسلام (س) کے مولانا عبدالرئوف فاروقی ، مولانا شاہ عبدالعزیز، مولانا سید محمد یوسف شاہ، اہل سنت و الجماعت کے مولانا احمد لدھیانوی اور متحدہ جمعیت اہل حدیث کے مولانا ضیاء اللہ شاہ بخاری ،ملی مسلم لیگ کے محمد حارث ڈار، جمعیت علماء اسلام نظریاتی کے مولاناخلیل احمد مخلص، مولانا محمد زبیر البازی، تحریک نوجوانان پاکستان کے عبداللہ گل،انصار الامہ پاکستان کے مولانا فضل الرحمن خلیل، پاکستان راہ حق پارٹی کے حکیم محمد ابراہیم قاسمی، مشائخ پاکستان کی طرف سے صاحبزادہ فیاض الحسن حق باہواور دیگر اہم رہنمائوں نے شرکت کیں۔

(جاری ہے)

اجلاس میں ملک کی سیاسی صورتحال پر غور کیا گیا اور حکومتوں کی پالیسی کے نتیجہ میں ملک کو پہنچنے والے نقصان پرتشویش کا اظہار کرتے ہوئے تمام قائدین نے اس بات پر اتفاق کیا کہ قوم کو استحصالی سیاسی قوتوں سے نجات دلانے اور ملک کو سیاسی، اقتصادی اور معاشرتی بحرانوں سے نکالنے اور داخلی و خارجی سازشوں سے محفوظ بنانے کیلئے مشترکہ سیاسی جدوجہد کی جائے۔

مشاورتی اجلاس میں تمام جماعتوں کے نمائندوں پر مشتمل ایک کمیٹی بنانے کا فیصلہ کیا گیا۔جو سات روز میں سیاسی جدوجہد کیلئے اہداف، نام، جھنڈا اور دیگر امور کو حتمی شکل دے کرآئندہ اجلاسیں تیز کرینگے۔کمیٹی درج ذیل افراد پر مشتمل ہو گی۔ مولانا عبدالرئوف فاروقی، مولانا محمد احمد لدھیانوی، مولانازبیر البازی، سید ضیائ اللہ شاہ، سیف اللہ خالد، پیر محمد سعید احمد، سعید الرشید عباسی ہونگے۔

اسی طرح ایک سیاسی کمیٹی بنائی گئی جو مختلف جماعتوں اور شخصیات کو اسی اتحاد میں شامل ہونے کی دعوت دے گی۔سیاسی کمیٹی میں مولانا عبدالرئوف فاروقی، مولانا محمد احمد لدھیانوی، صاحبزادہ فیاض الحسن حق باہو، مولانا محمد زبیر البازی اور مولانا فضل الرحمن خلیل شامل ہونگے۔ اجلاس میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ صوبہ سندھ کے سیاسی اور مذہبی شخصیات اور مشائخ سے مولانا ڈاکٹر ابو الخیر زبیر رابطہ کرینگے۔

اور انکا معاون مولانا حافظ احمد علی ہونگے۔اسی طرح صوبہ خیبر پختونخوا کے مشائخ کے ساتھ رابطے کی ذمہ داری مولانا سید محمد یوسف شاہ کو سونپی گئی۔صوبہ بلوچستان میں سیاسی اور مذہبی شخصیات کے ساتھ رابطوں کا ٹاسک جمعیت علمائے اسلام نظریاتی کو دی گئی۔ جبکہ قومی وطن پارٹی کے ساتھ رابطہ مولانا محمد ابراہیم قاسمی کے ذمے دی گئی۔صوبہ پنجاب کے مشائخ کے ساتھ رابطہ صاحبزادہ مولانا فیاض الحسن حق باہوکرینگے جبکہ دیگر سیاسی جماعتوں سے رابطہ کیلئے بھی سیاسی کمیٹی نے منصوبہ بندی کرلی ہے اجلاس میں یہ طے کیا کہ 9 مئی کو دوسرا سربراہی اجلاس مولانا سمیع الحق کی دعوت پر اسلام آباد میں منعقد ہو گاجس میں اتحاد کے تمام اٴْمور کو حتمی شکل دینے پر غور کیا جائے گا۔۔۔۔۔اعجاز خان