بھارتی حکومت کو تاج محل کا رنگ بدلنے کی کوئی پروا نہیں ہے، بھارتی سپریم کورٹ

بدھ مئی 11:30

بھارتی حکومت کو تاج محل کا رنگ بدلنے کی کوئی پروا نہیں ہے، بھارتی سپریم ..
نئی دہلی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 02 مئی2018ء) بھارت کی عدالتِ عظمیٰ نے حکومت کو حکم دیا ہے کہ وہ تاج محل کے رنگ بدلنے کے مسئلے کے حل کے لئے بیرونی ماہرین کی مدد حاصل کرے۔ برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق عدالت نے حکومت سے کہا کہ اگر آپ کے پاس مہارت ہے بھی تو آپ اسے استعمال نہیں کر رہے یا شاید آپ کو پروا ہی نہیں ہے۔

(جاری ہے)

عدالت نے کہا کہ اس یادگار کا رنگ پیلا پڑگیا ہے اور بعض حصوں کا رنگ بھورا اور سبز ہوتا جارہا ہے، اس کی وجہ آلودگی اور کیڑے مکوڑوں کا فضلہ بتایا جاتا ہے۔

جسٹس مدن لوکر اور دیپک گپتا نے ماحولیات کے کارکنوں کی جانب سے پیش کردہ تاج محل کی تصاویر کا جائزہ لینے کے بعد حکومت کو حکم دیا کہ وہ بھارت کے اندر یا باہر سے ماہرین کی خدمات حاصل کرکے اس مسئلے کو حل کرے۔ اس سے قبل حکومت نے تاج محل کے قریب ہزاروں کارخانے بند کروادیئے تھے، تاہم کارکنوں کا کہنا ہے کہ یہ اقدام کافی نہیں ہے اور تاج محل کی چمک ماند پڑتی جا رہی ہے۔عدالت 9 مئی کو دوبارہ اس معاملے کی سماعت کرے گی۔

متعلقہ عنوان :