لاہور ہائی کورٹ ،عدلیہ مخالف تقاریر کرنے پر وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال کو توہین عدالت کا نوٹس جاری

بدھ مئی 14:57

لاہور ہائی کورٹ ،عدلیہ مخالف تقاریر کرنے پر وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال ..
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 02 مئی2018ء) لاہور ہائی کورٹ نے عدلیہ مخالف تقاریر کرنے پر وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کرتے ہوئے پیر سات مئی کو ذاتی طور پر پیش ہونے کی ہدایت کردی ہے جبکہ سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کی تقاریر پر پابندی کی غلط خبر نشر ہونے پر عدالت نے سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے چیئرمین پیمرا سے رپورٹ بھی طلب کرلی ہے ۔

(جاری ہے)

تفصیلات کے مطابق بدھ کے روز لاہور ہائی کورٹ میں سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کی عدلیہ مخالف تقاریر کے حوالے سے سماعت کے موقع پر اظہر صدیق ایڈووکیٹ نے وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال کیخلاف توہین عدالت کی درخواست دائر کی جس میں موقف اختیار کیا گیا کہ احسن اقبال کی تقاریر پر بھی توہین عدالت کے زمرے میں آتی ہیں جس پر عدالت نے وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کرتے ہوئے پیر سات مئی کو ذاتی طورپر پیش ہونے کی ہدایت کردی ہے جبکہ سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کی تقاریر پر پابندی کی غلط خبر نشر ہونے پر عدالت نے سخت برہمی کااظہار کرتے ہوئے چیئرمین پیمرا سے استفسار کیا کہ یہ غلط خبر کیسے چلی تو انہوں نے بتایا کہ غلط خبر چلانے والے چینلز کو نوٹس جاری کیا ہے علاوہ ازیں عدالت نے پندرہ روز قبل عدلیہ مخالف تقاریر کی مانیٹرنگ کرنے کے بارے میں عملدرآد رپورٹ چیئرمین پیمرا سے طلب کرلی ہے ۔