روزانہ معمول سے ہٹ کر تیس منٹ کی جسمانی سرگرمیاں زیابیطس کے خطرات میں خاطر خواہ کمی کرسکتی ہیں

1980ء میں دنیا بھر میں زیابیطس میں مبتلا افراد کی تعداد دس کروڑ 80 لاکھ ، 2014 ء میں 42کروڑ 20 لاکھ ہو گئی،عالمی ادارہ صحت

بدھ مئی 15:32

لندن ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 02 مئی2018ء) برطانوی طبی ماہرین نے کہا ہے کہ روزانہ معمول سے ہٹ کر محض تیس منٹ کی جسمانی سرگرمیاں زیابیطس میں مبتلا ہونے کے خطرات میں خاطر خواہ کمی کرسکتی ہیں۔ عالمی ادارہ صحت کی رپورٹ کے مطابق 1980ء میں دنیا بھر میں زیابیطس میں مبتلا افراد کی تعداد دس کروڑ 80 لاکھ تھی جو 2014 ء میں بڑھ کر 42کروڑ 20لاکھ ہو گئی جبکہ 2015ء میں زیابیطس دنیا بھر میں 16 لاکھ اموات کا باعث بنا۔

طبی ماہرین کے مطابق زیابیطس کی وجوہات میں جنیاتی ساخت، خاندان، صحت اور ماحولیاتی عوامل شامل ہیں۔زیابیطس ٹائپ ون کی صورت میں جسم کا اپنا مدافعتی نظام لبلبے میں انسولین بنانے والے خلیوں کو تباہ کردیتا ہے۔وائرس یا بیکٹیریا کی وجہ سے جسم میں ہونے والی انفیکشن، کھانے پینے کی اشیاء میں شامل کیمیائی زہر اور مدافعتی نظام کو غیر ضروری طور پر متحرک کرنے والے عوامل زیابیطس کا باعث بن سکتے ہیں۔

(جاری ہے)

زیابیطس ٹائپ ٹو کی بڑی وجہ کسی خاندان کے اکثر افراد کا اس مرض میں مبتلا ہونا بھی ہو سکتا ہے اس کے علاوہ بسیار خوری، آرام پسندی، بڑھتی عمر اور غیر صحت مندانہ خوراک بھی زیابیطس کا باعث بن سکتی ہیں۔برطانوی طبی ماہرین کے مطابق ہفتے میں پانچ دن معمول سے ہٹ کی تیس منٹ روزانہ کی جسمانی سرگرمیاں زیابیطس میں مبتلا ہونے کے خطرات میں خاطر خواہ کمی کر سکتی ہے تاہم بچوں کے لئے جسمانی سرگرمیوں کا دورانیہ کم از کم ایک گھنٹہ روزانہ ہونا بے حد ضروری ہے۔

جسمانی سرگرمیوں میں تیز چلنا، سیڑھیاں چڑھنا، بازار سے خریداری، باغبانی، گھریلو کام کاج، اپنے کام خود کرنا، رقص اور مختلف کھیلیں شامل ہیں تاہم امراض قلب میں مبتلا افراد کو ان سرگرمیوں کا انتخاب اپنے ڈاکٹر کے مشورے سے کرنا چاہیے۔

متعلقہ عنوان :