ایران اور پاکستان کے درمیان تعلقات گرمجوشی پر مبنی ہیں، دونوں ممالک کو نئی سوچ اپناکر تیزی سے آگے بڑھنا چاہیے‘ایرانی سفیر

دونوں ممالک کے درمیان تجارت بڑھ رہی ہے مگر یہ پوٹینشل سے بہت کم ہے، تجارتی تنظیموں کو اس بارے میں اہم کردار ادا کرنا چاہیے‘مہدی ہنر دوست

بدھ مئی 18:33

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 02 مئی2018ء) ایران کے فری ٹریڈ زونز میں پاکستانی تاجروں کے لیے وسیع پوٹینشل ہے جس سے وہ مشترکہ منصوبہ سازی کے ذریعے بھرپور فائدہ اٹھاسکتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار ایران کے سفیر مہدی ہنردوست نے لاہور چیمبر کے صدر ملک طاہر جاوید، سینئر نائب صدرخواجہ خاور رشید، نائب صدر ذیشان خلیل اور ایگزیکٹو کمیٹی اراکین سے ملاقات میں کیا۔

سابق صدور سید محسن رضا بخاری اور سہیل لاشاری بھی اس موقع پر موجود تھے۔ ایرانی سفیر نے کہا کہ ایران اور پاکستان کے درمیان تعلقات گرمجوشی پر مبنی ہیں، دونوں ممالک کو نئی سوچ اپناکر تیزی سے آگے بڑھنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ اگرچہ دونوں ممالک کے درمیان تجارت بڑھ رہی ہے مگر یہ پوٹینشل سے بہت کم ہے، انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کی تجارتی تنظیموں کو اس بارے میں اہم کردار ادا کرنا چاہیے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ ایرانی سفارتخانہ اور قونصلیٹ پاکستانی تاجروں کے لیے ہمیشہ کھلے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایران توانائی کے شعبے میں پاکستان سے تعاون کرنے کو تیار ہے۔ انہوں نے بتایا کہ بینکنگ چینل کے قیام اور کرنسی سواپ کے لیے بات چیت جاری ہے۔ لاہور چیمبر کے صدر ملک طاہر جاوید نے کہا کہ دوطرفہ تجارت اس سطح پر نہیں جس خواہش کا اظہار ایرانی صدر حسن روحانی نے اپنے دورہ کے دوران کیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ تجارت کا حجم ہمیشہ ایران کے حق میں رہا ہے جسے برابری کی سطح پر لانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ باہمی تجارت کے فروغ کی راہ میں حائل رکاوٹوں کو مشترکہ کوششوں سے دور کیا جاسکتا ہے، بینکنگ چینلز کا قیام وقت کی اہم ضرورت ہے، اگر یہ مستقبل قریب میں ممکن نہیں تو دونوں ممالک کو بارٹرٹریڈ کرنسی سواپ ایگریمنٹ کرنے چاہئیں۔

انہوں نے لاہور،، کراچی اور اسلام آباد سے تہران کے لیے براہ راست پروازوں کے آغاز کے لیے ایرانی سفیر کی کوششوں کو بھی سراہا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور ایران دونوںکے پاس بہترین بندرگاہیں ہیں، کراچی اور گوادر سے چاہ بہار اور بندر عباس کے لیے براہ راست شپنگ سروس بھی ہونی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ لاہور چیمبر کے سابق صدر سید محسن رضا بخاری کی سربراہی میں پاک ایران تجارت کے فروغ کے لیے ایک خصوصی کمیٹی بھی تشکیل دی گئی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ ایران اور پاکستان کے چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری کو سنگل کنٹری نمائشوں اور تجارتی وفود کے تبادلے پر توجہ دینی چاہیے۔انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک مارکیٹ ریسرچ پر خاص توجہ دیں اور درآمدات اور برآمدات کے لیے ایک دوسرے کو فوقیت دیں۔