وزیر داخلہ احسن اقبال کیخلاف توہین عدالت،خواجہ آصف سے مراعات اور تنخواہ واپس لینے اور کے الیکٹرک کی نجکاری کیخلاف درخواستیں سپریم کورٹ میں دائر

بدھ مئی 19:36

وزیر داخلہ احسن اقبال کیخلاف توہین عدالت،خواجہ آصف سے مراعات اور ..
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 02 مئی2018ء) سپریم کورٹ میں وزیر داخلہ احسن اقبال کیخلاف توہین عدالت،،خواجہ آصف سے مراعات اور تنخواہ واپس لینے اور کے الیکٹرک کی نجکاری کیخلاف درخواستیں دائر کردی گئی ہیں ۔

(جاری ہے)

بدھ کے روز سپریم کورٹ میں تینوں درخواستیں عادی درخواست گزار محمود اختر نقوی کی جانب سے دائر کی گئی ہیں، وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال کیخلاف توہین عدالت کی دائر کردہ درخواست میں موقف اپنایا گیا ہے کہ احسن اقبال نے اپنے بیان میں چیف جسٹس کی توہین کی ہے، احسن اقبال کو آئین کے ارٹیکل 63-64 کے تحت نااہل قرارٴْدیا جائے، درخواست گزار نے استدعا کی ہے کہ احسن اقبال سے 2008-2108 تک وصول کی گی تمام مراعات اور تنخواہ واپس لی جائے، سپریم کورٹ میں خواجہ آصف سے تنخواہ اور مراعات واپس لینے کے لیے دائر کی گئی درخواست میں کہا گیا ہے کہ اسلام اباد ہائی کورٹ نے خواجہ آصف کو 62/1 ایف کے تحت نااہل قرار دیا، خواجہ آصف کا نام ای سی ایل میں شامل کر. کے تمام تنخواہیں اور مراعات واپس لی جائیں درخواست گزار نے استدعا کی ہے کہ خواجہ آصف کی کسی سرکاری ادارے اور غیر سرکاری ادارے میں تقریر پر پابندی عائد کی جائے، سپریم کورٹ میں کے الیکٹرک کی نجکاری کے خلاف درخواست دائر میں درخواست گزار محمود اختر نقوی نے وزارت پانی وبجلی،وزارت نجکاری،، کے الیکڑک کو فریق بنایا ہے، درخواست میں وزیر اعظم کو بذریعہ سیکرٹری اور صدر کو بزریعہ پرنسپل سیکرٹری فریق بنایا گیا ہے، محمود اختر نقوی نے درخواست میں کہا ہے کہ کے الیکٹرککی نجکاری کو ختم کرنا قومی مفاد میں ہے، کے الیکٹرککی نجکاری سے کراچی کے گھریلواور کاروباری صارفین کو تکلیف کا سامنا ہے، کے الیکٹرک نے گیس کے 80 ارب کے واجبات بھی ادا نہیں کیے، نجکاری ملی بھگت سے ہوئی جس سے اربوں کا نقصان ہوا،درخواست میں نجکاری کو ختم کر کے کے الیکٹرک کو قومی تحویل میں لئے جانے اور کراچی میں غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کے فوری خاتمے کی استدعا کی گئی ہے۔